Mian Manzoor Wattoo calls upon ECP to seek assets details from potential Parliamentarian as given by him

watoo
Mian Manzoor Ahmed Wattoo, President Punjab PPP, while talking to media here today said that there was no bar to increase legitimate assets by the politicians when they were not holding public office.
He added that the Prime Minister and other holder of public offices should also declare their and their immediate family members’ assets in the foreign country.
He pointed out that the Prime Minister or other Cabinet members should not engage themselves in business propositions for personal gains due to the conflict of interest adding this was the established practice in developed democracies.
He called upon the Election Commission of Pakistan to seek the details of the assets from the potential parliamentarians as written by him in his biography(Jurm-e-Siyasat) at page 367. The furnishing of details of assets by the Parliamentarians will curb the temptation of amassing money, he observed. It would change the political landscape of the country in favor of the common people, he predicted.
He said that he had mentioned the details of his assets in the book, consisting inherited property and also the details of the property, moveable and immoveable, after holding official positions beginning from district chairman to the chief Minister of Punjab and the Federal Minister.
He added that he had also mentioned under oath that there was no property of any worth of him or his immediate family members in the foreign countries.
He stated that details of his and his family member’s assets were comprehensively given in his book explaining both increase and decrease of assets from 1985 to 2013 during which he was holding various official positions and was also member of the provincial and National Assembly.

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے آج میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے کہا کہ سیاستدانوں پر کوئی قدغن نہیں ہے کہ وہ جائز طریقے سے اپنے اثاثہ جات نہ بڑھائیں۔ انہوں نے وزیراعظم، وزراء اور تمام پبلک آفس ہولڈرز سے کہا کہ وہ اپنے اور اپنے بچوں کے بیرون ملک اثاثہ جات کی تفصیلات بھی پبلک کریں۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم اور اسکی کابینہ کے ممبران کو کسی ایسے بزنس میں ملوث نہیں ہونا چاہیے جس سے ان کو ذاتی طور پر مالی فائدہ پہنچتا ہو کیونکہ ایسا کرنا قانون کے زمرے میں نہیں آتا اور ترقی یافتہ جمہوریتوں میں ایسا نہیں ہوتا۔ انہوں نے الیکشن کمیشن آف پاکستان سے کہا کہ وہ آئندہ منتخب ہونے والے ممبران اسمبلی سے ان کے اور انکے خاندان کے ممبران کے بیرون ملک اور اندورن ملک اثاثہ جات کی تفصیلات حاصل کرنا الیکشن لڑنے کی شرط ہونی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ یہ تفصیلات ایسی ہونی چاہئیں جیسا کہ انہوں نے اپنی کتاب (جرم سیاست) کے صفحہ 367 میں شائع کی ہیں۔ انہوں نے پیشینگوئی کی کہ اگر ایسا ہو جائے تو ملک میں عام لوگوں کے حق میں ایک بڑی تبدیلی رونما ہو سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے اپنے اور اپنے اہل خانہ کے اثاثہ جات کی پوری تفصیلات دی ہیں جن میں وراثت سے حاصل شدہ کے علاوہ وہ بھی ہیں جو کہ انہوں نے 1985 سے لے کر 2013 کے دوران اضافہ ہوا جب وہ وزیر اعلیٰ پنجاب اور وفاقی وزیر کے عہدوں پر فائز رہے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے حلفاً یہ بھی تحریر کیا ہے کہ انکے یا انکے اہل خانہ کے بیرون ملک میں ایک ڈالر کی بھی پراپرٹی نہیں ہے اور نہ ہی کوئی غیر ملکی اکاؤنٹ ہے۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں