Mian Manzoor Ahmed Wattoo skeptical of achieving wheat target this year

wattoo-terms-military-courts-as-right-step-to-deal-with-terrorists-1420901440-6228
Mian Manzoor Ahmed Wattoo,President Punjab PPP, has expressed his apprehensions that wheat target will not be achieved this year due to the scarcity of water attributed to excessive load shedding of electricity and farmers are unable to run their tube wells.
He said this in a statement issued from here today adding that the impression of this government as anti-farmers government was strengthening after every passing day. All the representatives organizations of the country are up against the government, he observed.
He pointed out that the rice growers had been devastated due to the abject support price this year and the government’s step-motherly treatment meted out to them was unforgiving.
He said that the government even did not discuss the issue of compensating the rice growers not to speak of extending subsidy to them to dispel the impression of its hostility towards them.
He thanked the Prime Minister for forcing the people of the country including him to cook food by burning woods because the gas had become a scarce commodity. This government has driven the nation to the stone age.
He added that the people of Punjab were getting ready to beat the heat with hand made fan invented by Punjab Chief Minister Shahbaz Sharif in the face of anticipated agonizing load shedding of electricity in the summer season.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo recalled that the PML(N) leadership rejected the Rental Power Projects of the then PPP government and now going for the same without compunction.
The leaders of the present government unleashed a high key propaganda campaign against the government and succeeded in scaring away the foreign investors of Rental Power. Had they not done petty politics on the projects the load shedding of electricity would have not been here, he maintained.

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے آج یہاں سے جاری ایک بیان میں خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سال گندم کی پیداوار کا ہدف حاصل نہیں ہو سکے گا کیونکہ بجلی کی تباہ کن لوڈشیڈنگ کی وجہ سے کسان ٹیوب ویل نہیں چلا سکتے اور گندم کی فصل کو پانی نہیں مل رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کسانوں کی تمام تنظیموں میں اس حکومت کا کاشتکار دشمن کا تاثر دن بدن مضبوط ہو رہا ہے اور وہ سراپا احتجاج ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ چاول کا کاشتکار پہلے ہی تباہ حال ہے کیونکہ اس سال چاول کی قیمت اتنی رہی ہے جو کہ کسان کے اٹھنے والے اخراجات سے بھی کم ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت چاول کے کاشتکاروں کو سبسڈی دینے کے معاملے میں ابھی تک ٹس سے مس نہیں ہوئی ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے نواز شریف کی حکومت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ جنہوں نے لوگوں کو بشمول انکے لکڑیاں جلا کر کھانا پکانے پر مجبور کر دیا ہے۔ اسوقت پاکستان پتھر کے زمانے کا ملک نظر آتا ہے جہاں پر گیس ہے اور نہ ہی بجلی۔ انہوں نے کہا کہ لوگ شہباز شریف کے ایجاد کئے ہوئے ہاتھوں کے پنکھے اکٹھے کر رہے ہیں تا کہ آئندہ گرمیوں کے موسم میں گرمی کا مقابلہ کر سکیں کیونکہ بجلی کے پنکھوں کا چلنا مشکل نظر آتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت اب رینٹل پاور کی پالیسی کو نافذ کر رہی ہے جس نے پیپلز پارٹی کی حکومت کے زمانے میں اس پالیسی کو کئی نام دئیے اور ایک پروپیگنڈا مہم شروع کی جس سے غیر ملکی سرمایہ کار بھاگ گئے۔ انہوں نے کہا کہ اگر پی ایم ایل کی قیادت ایسا نہ کرتی تو ملک میں لوڈشیڈنگ بھی نہ ہوتی اور بجلی بھی اتنی مہنگی نہ ہوتی۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں