شہید بی بی اور سو گوا ر دسمبر تحریر: یا سر محمو د چو ہا ن

download

دسمبر ہما ری قو می تا ر یخ کا ایک سیا ہ تا ریک ما ہ ہے کیو نکہ دسمبر کی 16 تا ر یخ کو لا کھو ں قربا نیوں سے حا صل ہو نے والی عر ض پا ک دو ٹکڑو ں میں تقسیم ہو ئی۔ اور دسمبر کی 27 کو کرو ڑو ں دلو ں کی دھڑکن عظیم با پ کی عظیم دلیر بیٹی اسلا می دنیا کی پہلی خا تو ن وزیر اعظم علم ، تر قی و روشنی کی پیکر محتر مہ بینظیر بھٹو کو دہشت گر دی کی ایک بزدلا نہ کاروا ئی میں شہید کی گئی ۔ اور اب اسی دسمبر کی 16 کو ہی آرمی پبلک سکو ل پشا ور میں معصو م طلبا ء پر قیا مت ڈھا ئی گئی۔ محتر مہ کی شہا دت اس ملک اور قوم کے دشمنو ں کی ایک ایسی نا پا ک سا زش تھی جس کے تحت وہ سقو ط ڈھا کہ کی تا ر یخ دو ہرا نا چا ہتے تھے۔لیکن اللہ تعا لیٰ کی مد د و نصرت اور ہما ری عسکر ی وقو می سیا سی قیا دت میڈیا دا نشو ر ، غر ض سب طبقہ زندگی کے با شعو ر افرا د نے با ہم مل کر اس سا زش کو نا کا م بنا دیا اور سب سے اہم کر دا ر سا بق صدر جنا ب آصف علی زردا ری نے اس وقت پا کستا ن کھپے
کا نعر ہ لگا کر سندھیو ں کے جذبا ت کو کنٹرو ل کیا ۔
شہید بی بی کو کیو ں شہید کیا گیا ان کا قصو ر کیا تھا، ان کے قا تل کو ن تھے تو اس کا بڑا سا دہ سا آسا ن جوا ب ہے شہید بی بی کے قا تل وہ سو چ ہے جو اس ملک و قوم کو اپنے مذہبی عقا ئد کا غلا م بنا نا چا ہتی ہیں۔ اپنی مر ضی کی شر یعت لا نا چا ہتی ہیں ، خوا تین کو گھر وں کی لو نڈیا ں بنا نا چا ہتی ہے۔ تعلیم اور سکو ل کا لجو ں کو ختم کر نا چا ہتی ہیں ، یہ سو چ علم کی فکر کی رو شنی کی تر قی و خو شحا لی کی دشمن ہے۔ کیو نکہ اگر لو گ تعلیم یا فتہ ، با شعو ر، ہو گئے تو یہ سو چ کبھی کا میا ب نہیں ہو پا ئے گی۔ جبکہ محتر مہ شہید جد ید تعلیم کی خوا تین کے مسا و یا نہ حقو ق کی مذہبی انتہا پسندی کے خا تمے کی ایک روشن خیا ل آزاد ، تر قی یا فتہ معا شرے کی علم بر دا ر تھی۔ اور اس فرسو دہ سو چ کی مخالف تھی اور اسکے را ستے کی سب سے بڑی مضبو ط دیو ار تھی ۔ اور یہی ان کا سب سے بڑا قصو ر تھا جو ان کی شہا دت کی وجہ بنا، اسی سو چ نے ہما ری افوا ج کے جنر ل سے لیکر سپا ہی تک کے ہزا رو ں
بہا در جوا نو ں کو شہید کیا ہے ، پو لیس و قا نو ن نا فذ کر نے وا لے ادا رو ں کے ہزا رو ں جوا نو ں کی قا تل یہی سو چ ہے ۔ یہی سو چ اب تک ہزا رو ں کی تعدا د میں بے گنا ہ
پا کستا نیو ں مرد و خوا تین ، بچے ، بزر گ، طلبا ء ، وکلا ء ، علما ء ، اسا تذہ ، صحا فیو ں کا خو ن بہا چکی ہے ۔ یہی سو چ بشیر بلو ر کی قا تل ہے ، یہی سو چ میا ں افتحا ر کے اکلو تے بیٹے کی قا تل ہے اسی سو چ نے سوا ت میں ملا لہ پر حملہ کیا اور یہی سو چ پشا ور میں معصو م بچو ں اور ان کے اسا تذہ کی قا تل ہے ۔ کیونکہ اس سو چ کا اپنا ایجنڈا ہے ، اس کے آگے مسجد ، چر چ، سکو ل ، کا لج، یو نیو رسٹی ، ہسپتا ل ، با زا ر ، پا رک ، کو ئی اہمیت نہیں رکھتے ۔ یہ سو چ ہر اس فر د و ادا رے کی دشمن ہے جو تعلیم و تر قی ، خوشحا لی کی با ت کر تے
ہیں، جو ان کے را ستے کی رکا و ٹ بنتا ہے اس کو یہ نا پا ک سو چ بزو ر طا قت اپنے را ستے سے ہٹا دیتی ہے ، یا ہٹا نے کی کو شش کر تی ہے ۔
آج محتر مہ شہید کی شہا دت کو سا ت سا ل ہو چکے ہیں۔ پر ان کی شہا دت سے اس ملک و قو م کا نا قا بل تلا فی نقصا ن ہوا اور عر ض پا ک آج جن مسا ئل کے گردا ب میں پھنس چکی ہے ایسے میں شہید بی بی جیسی با صلا حیت فہم و فرا ست قا ئدا نہ ، مدبرا نہ ، رو شن خیا ل قیا دت کا ہو نا از حد ضروری تھا ۔ اب وہ وقت آگیا ہے کہ ہم سب پا کستا نی اپنے تما م سیا سی ، گر وہی ، مذہبی ، صو با ئی ، مسلکی ، وغیر ہ تما م اختلا فا ت ختم کر دیں سب یک زبا ن ہو کر پو ری قو ت سے افوا ج پا کستا ن کے سا تھ کھڑے ہو جا ئیں اور
محتر مہ شہید کے سا تھ سا تھ ہزا رو ں پا کستا نیو ں کی قا تل اور پشا ور میں قیا مت ڈھا نی وا لی اس گندی نا پا ک ، فر سو دہ سو چ پر قیا مت بن کر ٹو ٹ پڑیں اور اس گندی سو چ
کو ہمیشہ ہمیشہ کیلئے نست و نا بو دکر دیں ۔ کیو نکہ اسی میں ہما ری اور اس عر ض پا ک کی بھلا ئی ، سلا متی ، تر قی، مضبو طی و خو شحا لی ہے ۔ (انشا ء اللہ )

تحریر: یا سر محمو د چو ہا ن
Email: yasar.chohan@gmail.com
صدر شہید بینظیر فو رس پا کستا ن
را بطہ نمبر: 0335-7670006, 0310-5871414

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں