Tanvir Ashraf Kaira for the setting up of Judicial Commission‏

gimages
There is no moral, legal and political excuse for the government now of not setting up Judicial Commission to investigate the allegations of rigging after the similar disclosures in NA-122, said Tanvir Ashraf Kaira, Secretary General PPP, Central Punjab , in a statement issued from here today.

He said that the White Paper issued by PPP contained irrefutable evidence of electoral manipulations in the constituency and therefore it was imperative that the veracity of the allegations should be determined by a Judicial Commission of the Supreme Court. Fair, free and impartial elections are the lynchpin of the democratic process, he maintained.

He pointed out that the wide spread allegations of riggings had put a question mark on the legitimacy of the Parliament and the government must address it, sooner than later. In the absence of such step, the inevitability of the political turmoil cannot be wished away, he added.

He further said that such investigations were also the demand of the PPP that had been victimized in the elections held in May 2013 but accepted the results for the sake of the continuity of the political process.

He pointed out that it looked that the present government was the bigger danger to democracy because it had proved itself beyond any shadow of doubt of shooting into its feet with its own gun by creating back to back crisis of extraordinary nature having direct torturous bearings on the day- to- day life of the common people.

The situation has aggravated because of the legitimacy of the electoral process and the apathy of the government as after excessive load shedding of gas and electricity, petrol has evaporated from the country and the long queues of consumers at the filling stations manifested the abject mismanagement of the government.

He maintained that the people’s patience was tipping over the edges and they might be constrained to take law into their hands to turn over the apple cart altogether landing the country to anarchy. How the political system will withstand egregious ways of the mandarins, he asked?

تنویر اشرف کائرہ پاکستان پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب نے آج یہاں سے جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ اب حکومت کے پاس NA-122 کے انتخابی دھاندلیوں کے الزامات کے بعد کوئی اخلاقی، قانونی اور سیاسی جواز نہیں رہ گیا ہے کہ وہ انتخابی دھاندلیوں کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن نہ بنائے۔ انہوں نے کہا کہ اب یہ ضروری ہو گیا ہے کہ ایک آزاد جوڈیشل کمیشن کے ذریعے ان دھاندلیوں کے الزامات کے صحت کا تعین جلد از جلد کروایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ آزادانہ، منصفانہ اور غیر جانبدارانہ انتخابات کا انعقاد جمہوری عمل کا ایک لازمی حصہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی دھاندلیوں کے بڑے بڑے الزامات نے پارلیمنٹ کی نمائندہ حیثیت کو متنازعہ بنا دیا ہے اور اس لیے اسکی غیر متنازعہ حیثیت کو برقرار رکھنے کے لیے دھاندلیوں کی تحقیقات لازمی امر ہے۔ اگر ایسا نہ کیا گیا تو سیاسی بحران ناگزیر ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی دھاندلیوں کی تحقیقات اب پیپلز پارٹی کا بھی مطالبہ ہے جو کہ ایک متاثرہ پارٹی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی نتائج کو سیاسی نظام کے تسلسل کی خاطر قبول کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ سیاسی نظام کو موجودہ حکومت سے زیادہ خطرہ ہے کیونکہ یہ اپنے پاؤں پر کلہاڑی مارنے کی ماہر ہے اور اِنہوں نے یکے بعد دیگرے ملک میں بحران پیدا کر کے اس مہارت کو بلاشبہ ثابت کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گیس اور بجلی کی لوڈشیڈنگ کے عذاب کے بعد اب پٹرول کے بم نے روز مرہ زندگی کے معمولات کو مفلوج کر دیا ہے اور لوگ لمبی لمبی قطاروں میں پٹرول سٹیشنز پر کھڑے رہنے پر مجبور ہیں۔ انہوں نے متنبہ کیا کہ لوگوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہونے کو ہے اور ملک میں انارکی کا خدشہ ہے جسکے بعد دمادم مست قلندر بھی ہو سکتا ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ کونسا ایسا سیاسی نظام ہے جو ان بحرانوں کا سامنا کر سکتا ہو۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں