PPP to contest by -elections in NA-137, Nankana‏

download
A meeting was held here today under the chair of Mian Manzoor Ahmed Wattoo, PPP President Punjab Central, in which it was decided to contest the by-elections to be held in NA-137, Nankana, that fell vacant of the passing away of Roy Munseb Ali.

Other participants of the meeting were Tanvir Ashraf Kaira, Secretary General PPP Punjab, Chaudhry Manzoor Ahmed, divisional co-coordinator Lahore, Roy Shah Jehan Bhatti, District President Nankana Sahib, Asef Khan, distinct president, Shekhupura and others.

In the meeting, it was also decided that all the endeavors of the government would be frustrated that it tend to unleash to delay the holding of such elections based on its fear of losing the seat, or use the excessive administrative authority to secure the desired results.

While talking to the participants Mian Manzoor Ahmed Wattoo said that the government had proved its inaptness beyond recognition, and the people were fed up with them due to the back to back crisis of their making. As if the load shedding of electricity and gas was not enough and now the evaporation of petrol from the filling stations had dashed all hopes of the people of any improvement from them, he added..

Tanvir Ashraf Kaira expressed his serious doubts about the ability of the government to fight out terrorism in the country despite the across board massive political support and of the people of Pakistan alike. They lack vision and clarity and without these two pre-conditions to win war against terrorism is an uphill task if not impossible.

He called upon the government stop exploiting the political leadership of the country by playing on their fear of the scourge of terrorism adding it should instead implement the National Action Plan with speed and precision

Chaudhry Manzoor criticized the macro economic policies of the government adding that their privatization policy would be resisted tooth and nail because its juggernaut was stinking with their intention to befit the crony capitalists. The heaviest domestic borrowings by the government have already landed the banking sector into an acute liquidity crunch with negative fall out on the economy, he added.

He made it abundantly clear that the PPP would not allow government to tread on the trajectory of privatization relentlessly at the cost of labor’s jobs and their vital economic interests.

Mr. Asef Khan and Roy Shah Jehan Bhatti expressed their confidence that the PPP candidate would definitely get elected as the popularity of the PML (N) government was at the lowest ebb due to their utter failure to fulfill their tall promises made during the election campaign.

They urged the Party leaders to ensure the holding of by-elections on time adding contemplation of the government to delay the holding of such elections on one pretext or other must be frustrated.

پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب نے137 NA- ، ننکانہ صاحب کے ضمنی انتخابات میں بھرپور حصہ لینے کا فیصلہ آج یہاں ہونیوالے ایک اجلاس میں کیا جسکی صدارت میاں منظور احمد وٹو صدر پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب نے کی۔دوسرے شرکاء میں تنویر اشرف کائرہ، سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب، چوہدری منظور احمد ، ڈویثرنل کوآرڈینیٹر لاہور، رائے شاہ جہاں بھٹی، ضلعی صدر ننکانہ صاحب، آصف خان ضلعی صدر شیخوپورہ اور دوسرے شامل تھے۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیاگیا کہ ضمنی انتخابات کو ملتوی کروانے کے حکومتی ہتھکنڈوں کو ناکام بنانے کے علاوہ سرکاری ذرائع کے استعمال کی کوششوں کو بھی موثر طریقے سے روکا جائے گا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ موجودہ حکومت نے اپنی نااہلی کی بدترین مثال قائم کی ہے اور لوگ اب ان سے تنگ آچکے ہیں اور وہ انکو مزید برداشت کرنے کو ہرگز تیار نہیں۔ انہوں نے کہا کہ گیس اور بجلی کی لوڈشیڈنگ کے عذاب میں لوگ پہلے ہی مبتلا تھے اور اوپر سے پٹرول غائب ہونے سے لوگوں کی اس حکومت سے خیر کی تمام امیدیں دم توڑ گئی ہیں۔ تنویر اشرف کائرہ نے اس موقع پر کہا کہ انکو موجودہ حکومت کی دہشتگردی کے خلاف کامیابی کے امکانات اتنے روشن نظر نہیں آتے اسکے باوجود کہ تمام قومی سیاسی قیادت اور عوام انکی بھرپور حمایت کر رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ حکمران ویثرن سے عاری اور کنفیوژن کا شکار ہیں انکے ہوتے ہوئے دہشتگردی کے خلاف جنگ جیتنا اگر نا ممکن نہیں تو انتہائی مشکل ضرور ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت سیاسی جماعتوں کا استحصال دہشتگردی کا حواّ کھڑا کر کے نہ کرے اور اپنی پوری توجہ اب نیشنل ایکشن پلان کو جلد یکسوئی کے ساتھ عملی جامہ پہنانے پر مرکوز کرے۔ چوہدری منظور احمد نے حکومت کی معاشی پالیسیوں کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی نجکاری کی غیر قانونی اور بے رحم پالیسی کو مزدوروں کے حقوق کی قیمت پر ہرگز کامیاب نہیں ہونے دیگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ پالیسی چند سرمایہ داروں کو بے پناہ فائدہ پہنچانے کے لیے عمل میں لائی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے پرائیویٹ بینکوں کو بھی قانونی حد سے تجاوز کر کے بے پناہ قرضے لئے ہیں جس سے بینکنگ سیکٹر کنگال ہونے کے قریب آ گیا ہے۔ آصف خان اور رائے شاہ جہاں بھٹی نے پورے اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی کے امیدوار کے NA-137 میں ضمنی انتخاب کے جیتنے کے قومی امکانات ہیں کیونکہ اس وقت حکومت کی فعاش غلطیوں کی وجہ سے اسکا گراف کریش کر گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے الیکشن مہم کے دوران جو بلند بانگ دعوے کئے تھے حکومت انکو پورا کرنے میں بھی بلاشبہ بری طرح ناکام ہو گئی ہے۔ یاد رہے کہ NA-137 رائے منصب علی کی وفات کی بناء پر خالی ہوئی ہے۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں