صحت اور تعلیم کے شعبوں کی حالت دیکھ کر وزیر اعلیٰ پنجاب کے گڈ گورننس کے دعووں کی کلی کھل جاتی ہے: تنویر اشرف کائرہ

images

پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب کے سیکریٹری جنرل تنویر اشرف کائرہ نے وزیر اعلیٰ پنجاب کے بلند بانگ دعووں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انکا بھی وہی حشر ہو گا جو انہوں نے بجلی کی لوڈشیڈنگ کو سالوں میں نہیں بلکہ مہینوں میں کنٹرول کرنے کا دعوی کیا تھا۔یادرہے کہ پنجاب کے وزیراعلیٰ نے گزشتہ روز کہا ہے کہ وہ تحصیل اور ضلعی سطح کے سرکاری ہسپتالوں کے تمام ڈاکٹروں کی خالی آسامیاں اور میڈیکل سٹاف اس سال مارچ تک پرکردیں گے تا کہ صوبے کے لوگوں کو صحت کی سہولیات میسر آسکیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی شہرت کے پیش نظر ایسا ہوتا نظر نہیں آتا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ماضی میں ہسپتالوں کو جنریٹرز فراہم کئے گئے لیکن فیول خریدنے کے لیے فنڈز نہ ہونے کی وجہ سے اکثر ایمرجنسی وارڈز صرف نام کے ہی رہ گئے ہیں جہاں پر ادویات بھی نا پید ہیں۔انہوں نے کہا کہ سرگودھا کے ہسپتال میں کئی معصوم بچے اس لیے لقمہ اجل بن گئے کہ ہسپتال میں انکے علاج کے لیے ادویات موجود نہیں تھیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے پھر وعدہ کیا ہے کہ اس سال جولائی تک صوبے کے تمام ہسپتالوں میں میڈیکل سازو سامان اور ادویات کی کافی سپلائی کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ انکے لمبے لمبے میڈیا میں بیانات اور ٹیکس گزاروں کی رقم سے بڑے بڑے اشتہارات حقیقت کا کم ہی روپ دھارتے ہیں کیونکہ ان پر عمل نہ ہونے سے لوگوں کو سہولتوں میں بہتری کی بجائے اکثر ابتری آجاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ان اشتہاروں کی وجہ سے شاید انکو اور انکے خوشامدیوں کے چہروں پر ضرور خوشی آتی ہو گی لیکن عوام کے دکھوں کا مداوا نہیں ہوتا جو کہ انکے دور میں کئی گنا بڑھ گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ موجودہ وزیراعلیٰ کو گیلری سے کھیلنے کا فن خوب آتا ہے۔اسکے باوجود کہ ان کا عوام پر کوئی اچھا تاثر نہیں جاتا۔انہوں نے کہا کہ صحت اور تعلیم کے شعبوں کی دیگر گوں حالت دیکھ کر انکے گڈ گورننس کے دعووں کی کلی کھل جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ امن عامہ کی بگڑتی ہوئی صورتحال سے پنجاب کے عوام شدید عدم تحفظ کا شکار ہیں کیونکہ انکی جان و مال کی حفاظت کی کوئی گارنٹی نہیں ہے۔ انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ پیپلز پارٹی پنجاب حکومت کی نا اہلی اور سستی کی نشاندہی کرتی رہے گی تاکہ حکومت خواب خرگوش سے جاگے اور عوام کی خدمت میں سرگرم ہو۔ انہوں نے متنبہ کیا کہ اگر انہوں نے عوام کے لیے سہولتیں جلد باہم نہ پہنچائیں تو پھر وہ سڑکوں پر آ کر (گو شہباز گو)کے نعرے بھی لگانا شروع ہو جائیں گے۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں