جس قدر جلدہو سکے نگران وزیر اعظم پر اتفاق کر لینا چاہئے وزیراعظم کا اپوزیشن لیڈر کو خط

موقع کھو دیا تو معاملہ کمیٹی کے پاس چلاجائیگا،آئین کے تحت نگران وزیراعظم اتفاق رائے سے نامزد ہونا چاہئے ،جمہوریت کے استحکام کیلئے مل کر کام کیا ہے ،عوام کی نظریں ہم پرلگی ہوئی ہیں نگران وزیراعظم ایسا ہوجو نہ صرف آزادانہ اورمنصفانہ انتخابات کی راہ ہموار کرے بلکہ ملک میں شفاف الیکشن بھی کرائے :راجہ پرویز اشرف‘خط میں اسمبلیوں کی مدت پوری ہونے پر مبارکباد دی
1292425

اسلام آباد(خبر نگار،دنیا نیوز)وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ آئین کے تحت نگران وزیراعظم کے لئے مشاورت ضروری ہے ، اپوزیشن کی جانب سے نامزدگیاں بھیجی جائیں،جلد ہی کسی نام پر اتفاق کرلینا چاہئے ،موقع کھودیا تو معاملہ کمیٹی کے پاس چلاجائے گا۔ وزیر اعظم نے قائد حزب اختلاف چودھری نثار علی خان کو خط لکھا ہے جس میں اسمبلیوں کی 5 سالہ مدت پوری ہونے پر انھیں مبارکباد دی گئی ہے ۔ خط کے متن کے مطابق وزیراعظم پرویز اشرف نے کہا کہ نگران وزیر اعظم ایسا ہوجو نہ صرف آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کرائے بلکہ شفاف انتخابات کی راہ ہموار کرے ۔ نگران وزیر اعظم کے انتخاب کے لئے عوام کی نظریں ہم پر لگی ہوئی ہیں۔ آئین کے آرٹیکل 224 کے تحت اتفاق رائے سے نگران وزیر اعظم کا انتخاب کرنا ہے ۔ وزیراعظم نے قائد حزب اختلاف کو لکھے گئے خط میں لکھا ہے کہ موجودہ حکومت اور اپوزیشن نے مل کر جمہوریت کے استحکام اور عوام کی بہتری کے لیے اہم کردار ادا کیا ہے ، آپ سے درخواست کرتا ہوں کہ آئین کے آرٹیکل 224کے تحت نگران وزیراعظم کے لیے نام بھجوائیں، یہ ہمارے اوپر فرض ہے کہ اسمبلیوں کی مدت ختم ہونے سے پہلے آرٹیکل 224 کے تحت مشاورت کریں۔ وزیراعظم نے لکھا کہ ہمیں آئین کے تحت آزادانہ انتخابات یقینی بنانے کے لیے غیر جانبدار اور باکردار شخص کا بطور نگران وزیراعظم تقرر کرنا ہے ، اگر ہم نے یہ موقع کھو دیاتو آئین کے آرٹیکل 224اے کے تحت یہ معاملہ کمیٹی کے پاس چلا جائے گا، جتنا جلد ممکن ہو سکے ، ہمیں نگران وزیراعظم کے نام پر اتفاق کر لینا چاہیے ۔ وزیراعظم نے قائد حزب اختلاف کو لکھا ہے کہ عوام کو آزادانہ ماحول میں اپنے نمائندے منتخب کرنے کا موقع فراہم کرنا ضروری ہے ، آپ نگران وزیراعظم کے لیے اپنے اہل افراد کے نام جتنا جلدی ممکن ہو سکے ہمیں بھجوائیں۔

Source: Roznama Dunya

اپنا تبصرہ بھیجیں