Mian Manzoor Ahmad Wattoo Addresses PPP workers Convention in Pakpattan

Mian Manzoor Ahmed Wattoo offering fatheta at mazar of Baba Faraid Shaharghanj(Pakpattan) .
Mian Manzoor Ahmed Wattoo offering fatheta at mazar of Baba Faraid Shaharghanj(Pakpattan).

Picture
Stop fiddling with the sentiments of the people of Punjab, Mr. Chief Minister, by giving them false hopes of providing relief in the load shedding of electricity, said Mian Manzoor Ahmed Wattoo, President PPP Central Punjab, while addressing the charged jialas of PPP Workers Conventions in Arifwala, district Pakpattan today.
He was referring to the Punjab government’s announcement yesterday of building a power plant in Shaikhupura fueled by LNG to produce more than thousand mw of electricity. He said it would be too little and too late and even that possibility seemed a distant dream when reviewed in the context of the track record of this government’s performance in this regard.
He said that the people of the country considered the previous government of PPP in good light when compared with the performance of this government that seemed as having total disconnect with the problems of the people. Their apathy is simply unprecedented, he added.
He announced his prediction that this government of Punjab would not hold local bodies’ elections for fear of its inevitable defeat in the face of its popularity graph that was at the lowest ebb. People are fed up with this government and their patience is running out to take then on, he said.
He demanded that the Punjab Government should immediately announce election schedule as per the instructions of the Court for holding elections in the month of November this year.
He castigated the government for pursuing anti-farmers policies who were facing the appalling economic hardships because they had been left at the mercy of the market forces and the middle man. They are not getting even the cost of their produces not to speak of profit, he argued.
He demanded that the rice growers should be compensated at the rate of Rs. 5000 per acre as promised by the government adding that the indifference of the government was unforgiving in this count because it had turned its blind eye to their economic woes.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo announced amid the round of applause that Chairman Bilawal Bhutto would come to Pakistan in the month of April and would meet the workers and the office bearers of the Party. He is the true representative of the youth because he understands the problems of the youth as he belongs to the same age group, he asserted.
PPP is the Party of labour, farmers, harris, women, minorities, students and youth and had done a great job for their rights in the past adding that the Party would continue its struggle for the full realization of their rights and their empowerment.
He described that the PTI was an inexperienced political Party adding that its government in the KPK had yet to prove its worth in the province. He predicted that it would not be able to meet the expectations of the people of KPK and its graph would decline at a faster pace in the future.
He criticized the Punjab government for its abject failure to control the surge of heinous crimes in the province adding that the people were suffering in acute sense of insecurity as their life and property were insecure.
Earlier, Mian Manzoor Ahmed Wattoo went to the mazar of Baba Faraid Shaharghanj(Pakpattan) and offered fatheta.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo is accompanied by Tanvir Ashraf Kaira, Suhail Milk, Dewan Mohyuddin, Khurram Jehangir Wattoo, MPA,Mian Abdul Waheed, Manzoor Maneka, Maulana Yusuf Awan, Abid Siddique, Dr, Khayyam etc.

شہباز شریف صاحب لوگوں سے مذاق کرنا بند کر دیں کیونکہ بجلی کی لوڈشیڈنگ کو کنٹرول کرنا تو بڑی بات ہے آپ نے اس کو 2سال میں کم کرنے کی بجائے اسے مزید سنگین کر دیا ہے۔ یہ بات میاں منظور احمد وٹو صدر پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب نے عارف والا میں پیپلز پارٹی کے ورکر ز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ جسمیں بڑی تعد اد میں کارکنوں نے شرکت جسمیں کارکن کل بھی بھٹو زندہ تھا آج بھی بھٹو زندہ ہے، چاروں صوبوں کی زنجیر بینظیر بینظیر،آصف زرداری سب پہ بھاری اور منظور وٹو زندہ باد کے نعرے لگا رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ اب وزیر اعلیٰ شیخوپورہ میں دو سال کے بعد بجلی کا نیا پلانٹ لگانے کی نوید سنا رہے ہیں جس سے کوئی پتہ ہی نہیں ہے کہ کب بجلی پیدا ہوگی، بجلی پیدا ہو گی بھی یا نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت مکمل طور پر ناکام ہے اور اب لوگ پیپلز پارٹی کی حکومت کو یاد کر رہے ہیں کیونکہ انکے زمانے میں بجلی کی لوڈشیڈنگ بھی کم ہوتی تھی اور گھریلو صارفین کے لیے گیس کی لوڈشیڈنگ نہیں ہوتی تھی۔ میاں منظور احمد وٹو نے اپنے خطاب میں پنجاب حکومت سے پرزور مطالبہ کیا کہ وہ عدالت کے حکم کیمطابق مقامی حکومتوں کے انتخابات کروانے کا شیڈول فی الفور اعلان کرے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت شکست کے خوف سے مقامی حکومتوں کے انتخابات نہیں کروائے گی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کسان دشمن پالیسی پر عمل پیرا ہے جس نے کاشتکاروں کے معاشی قتل کا تہیہ کئے ہوئے ہے۔ انہوں نے پھر مطالبہ کیا کہ حکومت چاول کے کاشتکاروں کو اپنے وعدے کے مطابق 5 ہزار روپے فی ایکڑ سبسڈی دے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ چےئرمین بلاول بھٹو اپریل میں پاکستان میں آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو نوجوانوں کے حقیقی نمائندے ہیں اور ان کے مسائل کو اچھی طرح سمجھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی مزدوروں، کاشتکاروں، ہاریوں، طلباء، خواتین، اقلیتوں اور غریبوں کا ساتھ کبھی نہیں چھوڑے گی اور انکے حقوق کے مکمل بازیابی تک جدوجہد جاری رکھے گی۔انہوں نے کہا کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے غریبوں کے حقوق کے لیے اپنی جانوں کی پرواہ نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی شہیدوں کی جماعت ہے۔ تحریک انصاف کا ذکر کرتے ہوئے میاں منظور احمد وٹو نے اپنی تقریر میں کہا کہ یہ ایک نہ تجربہ کار سیاسی جماعت ہے جو ابھی تک خیبر پختونخواہ میں کار ہائے نمایاں سر انجام دینے میں کامیاب نہیں ہوئی ہے۔ انہوں نے پیشینگوئی کی کہ اس پارٹی کا گراف مستقبل میں مزید تیزی سے گرنا شروع ہو جائے گا۔ انہوں نے پنجاب میں سنگین جرائم کی شرح میں خطرناک حد تک اضافے کو ہدف تنقید بنایا۔ انہوں نے کہا کہ لوگ شدید عدم تحفظ کا شکار ہیں کیونکہ انکے جان و مال محفوظ نہیں ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ پنجاب کی پولیس کو بھی سیاسی مداخلت سے پاک کیا جائے کیونکہ اسکے بغیر صوبے میں امن عامہ کی صورتحال بہتر نہیں ہو سکتی۔ اس سے قبل میاں منظور احمد وٹو نے پاکپتن میں بابا فرید شکر گنج کے مزار پر حاضری دی اور دعا کی۔میاں منظور احمد وٹو نے ہمراہ تنویر اشرف کائرہ، سیکریٹری جنرل پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب ،دیوان محی الدین، سہیل ملک، میاں عبدالوحید، خرم جہانگیر وٹو، علامہ یوسف اعوان، عابد صدیقی، منظور مانیکا، ڈاکٹر خیام شامل ہیں

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں