پیپلز پارٹی ہمیشہ زراعت کی ترقی اور کاشتکار برادری کی بہتری کیلئے کوشاں رہے گی‘ آصف علی زرداری

zardari-announce-public-meetings-across-punjab-after-improvement-of-weather-1420991290-7497

پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین سابق صدر آصف علی زرداری نے (ن) لیگی حکومت کی جانب سے زرعی شعبے کو مسلسل نظرانداز کرنے پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کے اس طرز عمل سے کاشتکاروں میں سخت مایوسی پھیل رہی ہے، ملک کی معیشت میں زرعی سیکٹر کا حصہ کم سے کم ہوتا جا رہا ہے، دیگر منصوبوں کےلیے مختص رقوم بھی میٹرو بس پر خرچ کر دی گئیں،جب بھی پیپلزپارٹی کی حکومت آتی ہے تو زرعی شعبے پر توجہ دی جاتی ہے اور زرعی شعبہ ترقی کرتا ہے اور قومی دولت میں اضافہ ہوتا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ دیہی عوام خوشحال ہوتے ہیں۔ وہ منگل کو یہاںزرداری ہاؤس میں پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور وٹو اور پنجاب اسمبلی میں پی پی ارکان کے وفدسے ملاقات میں بات چیت کررہے تھے ۔ سابق صدر کے ترجمان نے کہا کہ اس ملاقات میں سینیٹ کے انتخابات پر گفت و شنید کے علاوہ پارٹی کے پنجاب کے لیڈروں نے شریک چیئرمین کی توجہ صوبے میں کاشتکاروں کی مشکلات کی جانب دلائی۔ کاشتکاروں کو حکومت کی جانب سے امدادی قیمت نہیں دی جا رہی اور آلو، گندم اور چاول کے کاشتکار بری طرح متاثر ہو رہے ہیں۔ آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی ہمیشہ زراعت کی ترقی اور کاشتکار برادری کی بہتری کیلئے کوشاں رہے گی اور ان کے حقوق کا تحفظ کرے گی۔ سابق صدر نے یہ بات پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور وٹو اور پنجاب سے تعلق رکھنے والے اراکین اسمبلی سے زرداری ہاؤس اسلام آباد میں ملاقات کرتے ہوئے کہی۔ سابق صدر کے ترجمان کے مطابق اس ملاقات میں سینٹ کے انتخابات پر گفت و شنید کے علاوہ پارٹی کے پنجاب کے لیڈروں نے شریک چیئرمین کی توجہ صوبے میں کاشتکاروں کی مشکلات کی جانب دلائی۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی نے اپنے دور حکومت میں کاشتکاروں کو امدادی قیمت دینے کے ساتھ ساتھ ٹیوب ویل چلانے کیلئے فی یونٹ آٹھ روپے مقرر کئے تھے جس کے بعد کاشتکار کے حالات بہتر ہوئے۔ انہوں نے یاد دلایا کہ شہید محترمہ بینظیر بھٹو کی حکومت میں جب ایک مرتبہ آلو کے کاشتکار مشکلات سے دوچار تھے تو انہوں نے حکومت سے کہا تھا کہ وہ آلو خرید لے اور کاشتکاروں کو ریلیف مہیا کرے۔ سابق صدر نے کہا کہ یہ خیال قطعی غلط ہے کہ زرعی اجناس آسانی سے درآمد کر لی جائیں کیونکہ اس سے کاشتکاروں کو بڑا نقصان ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ زرعی شعبے کے مسائل اصل میں غذائی تحفظ کے مسائل ہیں اور غذائی تحفظ عوام کیلئے سب سے مقدم ہے۔ سابق صدر نے کاشتکاروں کو یقین دلایا کہ پاکستان پیپلز پارٹی ان کے ساتھ کھڑی ہے اور زرعی شعبے کی ترقی اور کاشتکاروں کی خوشحالی کیلئے ہمیشہ ان کے ساتھ آواز اٹھاتی رہے گی۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں