حکومت کے پانچ سال مکمل :پیپلز پارٹی پنجاب کے زیر اہتام جشن جمہوریت

28993_234041460066950_1547974477_n

لاہور: پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے ترجمان منیر احمد خان نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی منتخب جمہوری حکومت نے نامساعد ترین حالات میں اپنی آئینی مدت کامیابی سے مکمل کی اور عوامی فلاح و بہبود کیلئے ریکارڈ ترقیاتی کام کرائے ، بدحال معیشت کو سنبھالا دیا ، زرمبادلہ کے ذخائر میں ریکارڈ اضافہ کیا اور جراتمندانہ فیصلوں سے خارجہ پالیسی کو قومی امنگوں سے ہمکنار کیا ،
60427_234042486733514_2035334023_n
پیپلز سیکرٹریٹ پنجاب میں منتخب جمہوری حکومت اور جمہوری اداروں کی مقررہ آئینی مدت کامیابی سے مکمل ہونے پر پیپلز پارٹی پنجاب کے زیر اہتمام سہ روزہ ” جشن جمہوریت ” کی افتتاحی تقریب میں حقائق نامہ پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی حکومت نے توانائی بحران سے نمٹنے کے لئے عالمی دباؤ مسترد کر کے پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبہ کا معاہدہ ، متبادل ذرائع سے توانائی کے نئے منصوبے خصوصا” تھرکول، گلگت ، بلتستا ن میں ہائیڈرل پاور پراجیکٹس اور دیگر میگا پراجیکٹس ، 3600 میگاواٹ بجلی کا سسٹم میں اضافہ کیا گیا ، ہوا اور پانی سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبے شروع کئے ، گلگت بلتستان میں غیر ملکی سرمایہ کاری سے ون ونڈو آپریشن کے تحت 45 ہزار میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کے منصوبے ، عوامی جمہوریہ چین کے ساتھ دیرینہ روابط مضبوط بنایا ، اشتراک و تعاون بڑھانا ، گوادر پورٹ چین کے حوالے کرنے کا جراتمندانہ اقدام جو پورے خطے کے بہترین مفاد میں دور رس نتائج کا حامل اور بڑھتی ہوئی بیرونی مداخلت روکنے میں مدد گار ثابت ہو گا ، تیل ، گیس ، سونے ، تانبے ، معدنیات کے نئے ذخائر کی دریافت ، قومی و بین الاقوامی کمپنیوں سے معاہدے، 14 برس سے زیر التوا این ایف سی ایوارڈ کا اجرائکیا اور اس پر قومی اتفاق رائے بھی حاصل کیا ، اٹھارویں ، انیسویں ، بیسویں آئینی ترامیم کے ذریعے قومی اتفاق رائے سے 1973 ء کے متفقہ آئین کی بحالی ، اٹھارویں آئینی ترمیم کے تحت تمام اختیارات کی پارلیمنٹ کو منتقلی ، صدر مملکت کی جانب سے رضاکارانہ طور پر اپنے اختیارات وزیر اعظم کے حوالے کرنا ، مسلح افواج سمیت تمام قومی اداروں کو پارلیمنٹ کے سامنے جوابدہ بنانا ، اعلی عدلیہ / ججز کی بحالی ، آئین ، پارلیمنٹ کی بالا دستی ، عدلیہ کے وقار ، آزادی میں اضافہ ، بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے ذریعے 75 لاکھ گھرانوں / پانچ کروڑ مستحقین کی آبرومندانہ مالی اعانت ، بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے تحت دی جانیوالی مالی امداد میں 100 فیصد اضافہ،وسیلہ حق ، وسیلہ روزگار سکیموں کے ذریعے کم آمدن اور محدود آمدن والے لاکھوں گھرانوں کی خود کفالت سکیم، سرکاری ملازمین کی تنخواہوں ، مراعات ، پنشن میں گذشتہ پانچ برس میں پانچ بار اضافہ ، سابق دور میں جبری بیروزگار کئے گئے ہزاروں سرکاری ملازمین کی بحالی ، لاکھوں عارضی اور کنٹریکٹ ملازمین مستقل کئے ،اقلیتوں کے لئے سینیٹ ، اسمبلیوں میں مختص نشستیں بڑھائیں ، قومی تاریخ میں پہلی بار مکمل وزارت اقلیتی امور قائم کی ، سرکاری ملازمتوں میں اقلیتوں کے لئے 5 فیصد کوٹہ مختص کیا گیا ، اقلیتی تہوار سرکاری سطح پر منانے کا فیصلہ کیا ، گلگت بلتستان کو الگ صوبے کا درجہ / انقلابی اصلاحات / ترقیاتی منصوبے ، فاٹا میں اصلاحات / ایف سی آر پر مثبت نظر ثانی ، 50 ہزار بلوچ نوجوانوں کی پاک فوج میں بھرتی ، صوبہ سرحد کے عوام کے دیرینہ مطالبہ کی منظوری ، فرنگی راج کا نام بدل کر خیبرپختونخواہ کا نام دینا ، صنعتی کارکنوں / مزدوروں کو شئیرز کے ذریعے ملکیت میں حصہ دار بنانا، گندم کی امدادی قیمت میں اضافہ جسکے نتیجے میں آج پاکستان گندم میں نہ صرف خود کفیل ہے بلکہ ایکسپورٹ کر رہاہے، آزادانہ ، منصفانہ عام انتخابات یقینی بنانے کے لئے اپوزیشن کے نامزد کردہ چیف الیکشن کمشنر کا تقرر ، خواتین کے لئے عوامی نمائندگی ، ہر شعبہ میں آگے بڑھنے کے زیادہ سے زیادہ مواقع کی فراہمی ، آبپاشی کے لئے درکاری پانی کی ضرورت پوری کرنے اور توانائی بحران میں کمی کے لئے دیامر بھاشاڈیم کی بروقت تکمیل اور تربیلا ڈیم میں اگلے 35 برس کے ل ئے توسیعی منصوبہ مکمل کرنے کے لئے بیرونی سرمایہ کاری اور مطلوبہ فنڈز کی فراہمی یقینی بنانا ، میڈیا کو مکمل آزادی ، صحافتی اداروں ، کارکنوں کے لئے آٹھویں ویج بورڈ ایوارڈ کا قیام اور سرکاری اشتہارات کے واجبات کی ادائیگی ، 1973 ء کے آئین کے مطابق صوبائی خود مختاری – وفاق کے آدھے سے زائد محکمے صوبوں کو ٹرانسفر، سیاسی انتقام کا خاتمہ ، نئے مفاہمانہ سیاسی کلچر کی داغ بیل –
485895_234044706733292_563595522_n
پانچ برس میں ایک بھی سیاسی مقدمہ یا سیاسی قیدی نہیں ، کسانوں کے مسائل کم آمدن بڑھانے کے لئے زرعی ٹیوب ویلوں کے لئے بجلی کے فلیٹ ریٹ بھی پیپلز پارٹی کا اہم کام ہے جس سے کاشتکاروں کی پیداواری لاگت کم ہو گی جبکہ زرعی پیداور میں اضافہ ہو گا ، تقریب سے حاجی عزیز الرحمان چن ، دیون محی الدین ، پرویز رفیق ، خرم کھوسہ ، حسنا ت احمد شاہ ، محترمہ نرگس اعوان ، عائشہ گوہر ، یاسمین فاروق ، صغیرہ اسلام ، ریحانہ بٹ ، نسیم چوہدری ، ریحانہ بٹ ، بشری ملک ، علامہ یوسف اعوان ، فائزہ ملک ، خالد بٹ ، اختر شاہ ، لیاقت شاہ ، شیخ عرفان ، ڈاکٹر ضیاء اللہ بنگش ، ماسٹر تاج حیدر ، طارق شبیر میو ، افنان بٹ اور پیپلز پارٹی کے دیگر رہنماؤں نے بھی خطاب کیا ، شرکاء جئے بھٹو ، زندہ ہے بی بی زندہ ہے اور میاں منظور وٹو زندہ باد کے نعرے لگاتے رہے ، شرکاء میں مٹھائی بھی تقسیم کی گئی

311717_234037396734023_1787727397_n

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں