پیپلز پارٹی کی منتخب جمہوری حکومت نے مذاکرات اور مثبت اقدامات کے ذریعے نفرت کے خاتمے اور بلوچ عوام کو قومی دھارے میں واپس لانے میں کامیابی حاصل کی: میاں منظور احمد وٹو

488245_395115010595326_1233840903_n

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹونے بلوچستان نیشنل پارٹی کی جانب سے عام انتخابات میں حصہ لینے کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہوئے اسے ایک مستحسن اور خوش آئند فیصلہ قرار دیا ہے – پیپلز سیکرٹریٹ پنجاب میں پارٹی عہدیداروں اور امیدواروں سے ملاقات کے دوران انہوں نے کہا کہ صدر مملکت آصف علی زرداری کی مدبرانہ سیاست کے باعث بلوچستان میں ایک عرصہ سے جاری کشیدگی کم ہوئی ہے اور ناراض بلوچ پھر سے قومی دھارے میں شامل ہو رہے ہیں – انہوں نے کہا کہ نگران وزیر اعظم میر ہزار خان کھوسو کا بلوچستان سے انتخاب بھی پیپلز پارٹی کی اسی قومی سوچ کا مظہر ہے – میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ آصف علی زرداری نے صدارت کا منصب سنبھالتے ہی رضا کارانہ طور پر بلوچستان کے محب وطن عوام سے غیر مشروط معافی مانگی – انہوں نے کہاکہ صدر مملکت کی جانب سے بلوچستان کے لئے آغاز حقوق بلوچستان کے نام سے خصوصی مراعاتی پیکیج کا اعلان کیا گیا – وفاقی ملازمتوں میں بلوچ عوام کے لئے خصوصی کوٹہ مختص کیا گیا جبکہ پاک فوج میں پچاس ہزار بلوچ نوجوان بھرتی کئے گئے – میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ صدر مملکت اور وفاقی حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے مثبت اقدامات کے باعث نفرت کی خلیج کم ہوئی ہے – اور بلوچستان کے محب وطن عوام بتدریج قومی دھارے میں شامل ہو رہے ہیں انہو ں نے کہا کہ بلوچستان اور وہاں بسنے والے محب وطن عوام پر فوجی آمریت کے دور میں بے پناہ مظالم ڈھائے گئے – اس سے نفرت بڑھی اور بیرونی طاقتوں کو وہاں سازشیں کرنے کے مواقع ملے تاہم پاکستان پیپلز پارٹی کی منتخب جمہوری حکومت نے مذاکرات اور مثبت اقدامات کے ذریعے نفرت کے خاتمے اور بلوچ عوام کو قومی دھارے میں واپس لانے میں کامیابی حاصل کی – انہو ں نے توقع ظاہر کی کہ بلوچستان نیشنل پارٹی کی طرح بلوچستان کی دیگر جماعتیں بھی عام انتخابات میں حصہ لیں گی-

اپنا تبصرہ بھیجیں