سیاستدانوں کی تضحیک کرنے سے جمہوریت کی خدمت نہیں ہو سکتی, الیکشن کمیشن اچھا تاثر قائم نہیں رکھ سکا: منیر احمد خان

542593_234041826733580_734191998_n

پیپلز پارٹی پنجاب کے ترجمان اور انچارج پالیسی پلاننگ اینڈ میڈیا منیر احمد خان نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن اپنی تمام تر غیر جانبداری کے باوجود اپنا اچھا تاثر قائم نہیں رکھ سکا – سیاستدانوں کی تضحیک کرنے سے جمہوریت کی خدمت نہیں ہو سکتی – پیپلز سیکرٹریٹ پنجاب میں پارٹی عہدیداروں کے ایک اجلاس سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ انہی سیاستدانوں نے الیکشن کمیشن کو آزاد اور خود مختار بنایا ہے انہی ارکان اسمبلی نے سپریم کورٹ اور ہائیکورٹ کے ججوں کو رہائی دلوائی ہے اور عدلیہ کو آزاد ، خودمختار بنایا ہے – انہوں نے کہا عوام کو حق ہے کہ وہ اپنے نمائندے منتخب کرے الیکشن کمیشن کا یہ کام نہیں کہ وہ فیصلہ کرے کہ کونسا امیدوار بہتر ہے اور کونسا امیدوار بہتر نہیں ہے ، انہوں نے کہا کہ ریٹرننگ افسروں کے تضحیک آمیز رویہ سے دنیا بھر میں پاکستان کا مذاق اڑایا جا رہا ہے – انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے اہم رہنماؤں کے کاغذات مسترد کر کے الیکشن کمیشن دنیا کو کیا پیغام دینا چاہتا ہے – انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے ماضی میں بڑی بڑی آمریت کا مقابلہ کیا – ایک بھٹو کو مارا گیا تو کئی بھٹو پیدا ہوئے – انہوں نے کہا کہ پی پی پی کے ایک لیڈر کو روکا گیا تو ہزاروں لیڈر الیکشن لڑیں گے – انہوں نے کہا کہ آزادانہ ، منصفانہ انتخابات کا تقاضا یہ ہے کہ تمام فریقین کو مساوی موقع دیا جائے – انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی اس سے بڑی خدمت کیا ہو سکتی ہے کہ ہم نے اپوزیشن کے نامزد کردہ انتہائی معزز شخص کو چیف الیکشن کمیشنر بنا دیا – انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن اپنے فرائض کی بجا آوری میں کسی بھی فریق کا کردار ادا نہیں کرنا چاہئے بلکہ آئینی حدود میں رہ کر غیر جانبدار کردار ادا کرے – انہوں نے کہا کہ عوامی نمائندگی کے لئے نامزد ہونے والے امیدواروں کے ساتھ تعصب اور امتیازی سلوک کی شکایات بڑھتی جا رہی ہیں جس پر صدر مملکت آصف علی زرداری نے بھی تشویش کا اظہار کیا ہے – انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی عام انتخابات ملتوی کرانے کی تمام کوششیں ناکام بنا دے گی – انہو ں نے کہا کہ پاکستان نازک دور سے گذر رہا ہے ہمیں داخلی و خارجی سطح پر بہت سے بحرانوں اور سازشوں کا سامنا ہے – جن سے نمٹنے کے لئے جمہوریت کی مضبوطی اور عوامی راج کا تسلسل ضروری ہے – انہوں نے کہا کہ بحرانوں سے نکلنے اور آگے بڑھنے کے لئے ہمیں اپنی صفوں میں اتحاد کو یقینی بنانا ہو گا – انہوں نے کہا کہ فیصلے کی گھڑی قریب آ رہی ہے –

اپنا تبصرہ بھیجیں