پنجاب میں طویل غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ مصنوعی اور پیپلز پارٹی کے خلاف سوچی سمجھی سازش ہے: میاں منظوراحمد وٹو

488245_395115010595326_1233840903_n

پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے کہا ہے کہ پنجاب میں طویل غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ مصنوعی اور پیپلز پارٹی کے خلاف سوچی سمجھی سازش ہے ، انہوں نے نگران پنجاب حکومت کی جانب سے ہفتے میں دو چھٹیوں کے فیصلہ اور وفاق سے مصنوعی لوڈ شیڈنگ کا فوری نوٹس لینے کے مطالبہ کو نگران وزیر اعلی کی جانب سے عوامی مسائل حل کرانے کے لئے سنجیدگی کا مظہر قرار دیا -،میاں منظور احمد وٹو نے میڈیا سے غیر رسمی بات چیت کے دوران کہا کہ تیل کمپنیوں کو اسمبلیاں تحلیل ہونے سے قبل ہی پیپلز پارٹی کی وفاقی حکومت تمام ادائیگیاں کر چکی ہے اور معاہدہ کے تحت 30 جون تک بجلی گھروں کو تیل کی فراہمی میں تعطل نہیں آ سکتا اس کے باوجود غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سمجھ سے بالا تر ہے – انہوں نے کہا کہ اوچ پاور اسٹیشن مرمت کے بعد کام کر رہا ہے اور بجلی کی کمی اس قدر نہیں جتنی پنجاب میں لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے ، انہوں نے کہا کہ ان بوجھ کر پیپلز پارٹی کے خلاف عوامی جذبات بھڑکانے کے لئے مصنوعی طور پر پنجاب میں طویل اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے -انہوں نے کہا کہ نگران وزیر اعلی پنجاب نجم سیٹھی نے بھی اس معاملہ پر آواز اٹھائے ہے اور نگران وفاقی حکومت سے اس سازش کا فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے – انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے خلاف غیر جمہوری عناصر کی سازشیں ہر دور میں جاری رہی ہیں اور اب عام انتخابات کے قریب سازشی عناصر ایک بار پھر متحرک ہو گئے ہیں – انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف سمیت پیپلز پارٹی کے متعدد اہم رہنماؤں کی نا اہلی ، مقدمات اور کاغذات نامزدگی کا مسترد کیا جانا پیپلز پارٹی کو نقصان پہنچانے کی ناکام کوششیں ہیں تاکہ ملک کی سب سے بڑی اور مقبول ترین عوامی جماعت کو اقتدار سے دور رکھا جائے تاہم انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کو ماضی میں بڑی بڑی سازشوں کے ذریعے دبانے کی کوششیں کی گئیں مگر پیپلز پارٹی ہر بار نئے جذبہ کے ساتھ ابھر کر سامنے آتی رہی ، انہوں نے کہا کہ عوام باشعور ہیں وہ ساری سازشیں اچھی طرح سمجھ رہے ہیں ، اور ماضی کی طرح 2013 میں بھی کوئی سازش کامیاب نہیں ہو گی – اور وقت کے ساتھ ساتھ بڑھتا ہوا بھٹو ووٹ بنک آنے والے الیکشن میں بھی پیپلز پارٹی کو شاندار کامیابی سے ہمکنار کرے گا –

اپنا تبصرہ بھیجیں