بلوچستان صنعتکاروں کیلئے کسی جنت سے کم نہیں‘ سی پیک کے تحت صرف پنجاب میں کام ہو رہا ہے: سلیم مانڈوی والا

حب میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کا کہنا تھا کہ سرمایہ کاروں کو بلوچستان میں سرمایہ کاری کرنی چاہیئے۔ حب انڈسٹریل ایریا کی بہتری اور حب شہر کی خوبصورتی، امن وامان کی بحالی کیلئے بحثیت صدر لسبیلہ چیمبر آف کامرس کام کیا۔ حب سمیت بلوچستان میرے دل میں ہے۔

saleem-mandviwalla_400

ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈی والا نے حب میں انکے اعزاز میں بوہری کمیونٹی کی جانب سے دئیے گئے عشائیے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ سینیٹ انتخابات میں ناکامی پر ہمارے ہاں اکثر یہ الزامات لگاتے ہیں کہ چیئرمین فلاں صوبے سے ہے ڈپٹی فلاں صوبے سے ہے اگرکوئی ہارس ٹریڈنگ ہوئی ہوتی تو وہ بائیکاٹ کرتے‘ انہوں نے کہاکہ سی پیک کے حوالے سے ہر صوبے کے ایم پی ایز اور ایم این ایز نے بولا ہے کہ یہ منصوبہ پورے پاکستان کا ہے صرف پنجاب کا نہیں ہے اس منصوبے سے پاکستان میں روزگار کے مواقع فراہم ہوں گے۔ اپی پی پی کے دور اقتدار میں سی پیک معاہدہ ہوا اور پی پی پی نے گوادر پر کام کیا۔ مسلم لیگ (ن) نے اقتدار میں آنے کے بعد سی پیک کے تمام پروجیکٹ پنجاب میں لگائے، جس پر تینوں صوبوں کے تحفظات ہیں۔ ایوانوں میں سوال اٹھائے گئے، جبکہ چینی صدر نے جوائنٹ سیشن میں واضح کیا کہ سی پیک صرف پنجاب کا نہیں، بلکہ پورے پاکستان کا ہے۔ شہباز شریف کو پانچ سال بعد کراچی یاد آئی ہے۔ بلوچستان پرامن ہے۔ سرمایہ کاروں کو بلوچستان میں سرمایہ کاری کرنی چاہیئے۔ حب انڈسٹریل ایریا کی بہتری اور حب شہر کی خوبصورتی امن وامان کی بحالی کے لئے بحثیت صدر لسبیلہ چیمبر آف کامرس کام کیا۔ حب سمیت بلوچستان میرے دل میں ہے۔انہوں نے کہاکہ بلوچستان صنعتکاروں کیلئے کسی جنت سے کم نہیں بلوچستان میں صنعتکاروں کو کبھی کوئی مسئلہ درپیش نہیں رہا بلوچستان باالخصوص حب میں جو صنعتی ترقی کررہی ہے اس کی بڑی وجہ یہاں کے لوگوں کا تعاون ہے‘ انہوں نے کہاکہ میرا تعلق لسبیلہ چیمبر آف کامرس سے ہے اور میں اس کا صدر بھی رہا ہوں اور میں نے ہمیشہ کوشش کی ہے کہ ہر فورم پر حب کے صنعتکاروں کو در پیش مسائل کے حوالے سے آواز اٹھاؤں۔ تقریب سے لسبیلہ چیمبر آف کامرس کے صدر اسماعیل ستار سمیت بوری کمیونٹی کے معززین نے خطاب کیا۔
کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں