ن لیگ کے مقامی لیڈروں سے نہیں میرا مقابلہ شریف برادران سے ہے: میاں منظور احمد وٹو

DSC_3491

پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر اور حلقہ این اے 147 146-سے پیپلز پارٹی کے امیدوار میاں منظور احمد وٹو نے کہا ہے کہ ن لیگ کے مقامی لیڈروں سے نہیں میرا مقابلہ شریف برادران سے ہے – انہوں نے کہا کہ میرا اپنے حلقہ کے عوام سے دل کا رشتہ ہے اور یہ رشتہ تیسری پشت تک پہنچنے تک مضبوطی کے اس مقام تک پہنچ چکا ہے کہ مخالفین اپنے لئے ان سے ووٹ کی سپورٹ مانگنے کی بھی ہمت نہیں رکھتے – اپنے بیٹے صوبائی امیدوار خرم منظور وٹو کے ہمراہ حلقہ این اے 146-147 میں ڈورٹو ڈور انتخابی مہم کے بعد دیپالپور کے نواحی علاقہ رتیکی میں ایک بڑے جلسہ عام سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ذرا نواز شریف کا مقابلہ ذوالفقار علی بھٹو سے کرو ، محترمہ بینظیر بھٹو سے کرو ، ایک پارٹی کا قائد جیل میں مچھروں سے ڈر کر جدہ بھاگ گیا ، اور دوسری پارٹی کے دونوں قائدین نے عوام کے لئے حسینیت کا راستہ اپناتے ہوئے شہادت کو گلے لگالیا – انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور شہباز شریف اپنی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں کہتے ہیں کہ کوئی منظور وٹو کا تو بندوبست کرو – انہوں نے کہا کہ میرے ساتھ اللہ کی مدد اور عوام کا ساتھ ہے ، منظور احمد وٹو کا کوئی بال بھی بیکا نہیں کر سکتا – انہوں نے کہا کہ مجھے خوف صرف خدا کا ہے ، دنیا کی کوئی طاقت مجھے نہیں ڈرا سکتی- انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے مجھے نہیں میرے حلقہ کے عوام کو پیپلز پارٹی پنجاب کا صدر بنایا ہے ، انہوں نے کہا کہ صدر آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری نے پارٹی آپکے اور میرے حوالے کر دی –
DSC_3489
میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ میں اپنے لئے ووٹ مانگنے نہیں اپنے حلقہ کے عوام سے ملنے کے لئے آیا ہوں – 20-25 سال میں نے ہر لمحہ اپنے حلقہ کے عوام کی خدمت کی ہے – انہوں نے کہا کہ میں وساوے والا میں رہوں ، لاہور میں یا اسلام آباد میں اپنے حلقہ کے عوام کو ایک پل کے لئے بھی نہیں بھولا – انہوں نے کہا کہ آپ نے مجھے یا میرے بیٹے خرم منظور وٹو کو نہیں بلکہ اپنے آپ کو ووٹ دینا ہے ، میری فتح آپکی اپنی فتح ہے – انہوں نے کہا کہ آمریت کی گود میں پروان چڑھنے والے مفاد پرستوں کو جمہوریت سے خدا واسطے کا بیر ہے ، ایسے عناصر ذاتی مفادات کے لئے جمہوریت کا راگ تو الاپتے ہیں مگر عملی طور پر جمہوری اقدار پامال کرے ہوئے آمریت کی راہ ہموار کرنے کے لئے کوشاں رہتے ہیں-میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ صدر آصف علی زرداری کی قیادت میں پاکستان پیپلز پارٹی ملکی سلامتی ، جمہوری استحکام اور عوامی فلاح و بہبود کے لئے تمام تر مشکلات کے باوجود شہید بھٹو اور شہید بی بی کے ویژن کو کامیابی سے آگے بڑھا رہی ہے ، اور اہم قومی امور پر سب کو ساتھ لے کر چلنے کے لئے مسلسل ایثار و قربانی اور مثالی برداشت و تحمل کی راہ پر گامزن ہے ، انہوں نے کہا کہ سازشی اندھیرے بہت جلد چھٹنے والے ہیں ، اور مضبوط جمہوریت کا روشن اجالا تیزی سے پھیل رہا ہے ،
DSC_3510
میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی عوامی طاقت سے پنجاب میں بھی حکومت بنائے گی ، اور آمریت زادوں کے منفی عزائم شرمندہ تعبیر ہی رہیں گے – میاں منظور احمد وٹو کا پناہ نگر روڈ حویلی لکھا میں رانا محمد حنیف ، رانا اکرام اللہ ، رانا ثناء اللہ ، رانا محمد رفیق ، رانا محمد طیب، رانا محمد احسن شریف ، رانا انعام اللہ نے شاندار استقبال کیا اور علاقہ کے عوام اور اپنی طرف سے بھرپور حمایت کا یقین دلایا – رتیکی جلسہ عام کے منتظمین حاجی غلام حسین جندیکا ، غلام احمد جندیکا ، محمد ایاز جندیکا ، ملک نواز ، حاجی محمد امین سکھیرا ، حاجی محمد طاہر سکھیرا ، رفیق سکھیرا ، محمد حسن خان ، پیر تاج شاہ ، محمد صادق ، خالد وٹو ، رائے مخدوم ، رائے نور نبی ، نواب علی خان نے میاں منظور وٹو کا جلسہ گاہ پہنچنے پر شاندار استقبال کیا –
DSC_3480
اس موقع پر میاں منظور احمد وٹو نے میاں سردار علی خان مرحوم کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ میاں سردار علی خان نے ساری زندگی میرا ساتھ نہیں چھوڑا اور اب اسکا بیٹا نواب علی خان اپنے باپ کے نقش قدم پر چلتے ہوئے میرے اور میرے بیٹے خرم منظور وٹو کے ساتھ کھڑا ہے جس پر میں یہ کہوں گا کہ میرے حلقہ کے عوام کی رگوں میں وفا کوٹ کوٹ کر بھری ہے اور ان وفاؤں کی کوئی قیمت ادا نہیں کر سکتا –

اپنا تبصرہ بھیجیں