انتخابی عمل کے حوالہ سے تحفظات کے باوجود پیپلز پارٹی کسی غیر جمہوری کھیل کا حصہ نہیں بنے گی: منیر احمد خان

485895_234044706733292_563595522_n

پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے انچارج پالیسی پلاننگ اینڈ میڈیا منیر احمد خان نے کہا ہے کہ انتخابی عمل کے حوالہ سے تحفظات کے باوجود پیپلز پارٹی کسی غیر جمہوری کھیل کا حصہ نہیں بنے گی اور نہ ہی مخالفت برائے مخالفت کی روایتی سیاست اپنائے گی بلکہ مثبت ، تعمیری ، سنجیدہ اور موثر اپوزیشن کا کردار ذمہ داری سے سرانجام دے گی ۔ پیپلز سیکرٹریٹ پنجاب میں وفود سے ملاقاتوں اور میڈیا سے بات چیت کے دوران انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نظریاتی جماعت ہے جس کی ملک و قوم اور جمہوریت کے ساتھ کمٹمنٹ مثالی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک ، عوام اور جمہوریت کے لئے ایثار و قربانی کی قابل قدر مثالیں رقم کرنے والی مقبول عوامی جماعت پیپلز پارٹی کسی مرحلہ پر بھی عوام کو تنہا نہیں رہنے دے گی ، منیر احمد خان نے کہا کہ پیپلز پارٹی کو پرائمری یونٹ کی سطح پر از سر منظم ، فعال اور متحرک کیا جائے گا ۔ انہو ں نے بتایا کہ مرکزی قیادت پیپلز پارٹی کو نئے عزم سے عوامی خدمات کا تسلسل آگے بڑھانے کے لئے تیار کر رہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ پیپلز پارٹی کی نئی تنظیم و ترتیب میں یوتھ کی موثر نمائندگی یقینی بنائی جائیگی۔انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے اپنے پانچ سالہ دور حکومت میں جہاں ایک طرف مفاہمت کی پالیسی اپنائی دوسری طرف پانچ سال میں ایک بھی سیاسی انتقام کے تحت کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ تاریخ میں پیپلز پارٹی کے پانچ سالہ دور کو ” سیاسی انتقام سے بالا تر” کے دور کے طور پر یاد رکھا جائے گا ۔ انہو ں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے سیاسی انتقام نہ لینے کی روایت کی ایسی بنیاد رکھ دی ہے کہ آنیوالی حکومتوں کے لئے ” مشکلات” پیدا کر دی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ آنیوالی حکومت کے لئے بھی مشکل ہو گا کہ وہ سیاسی انتقام کے طور پر مقدمے درج کرا کے مخالفین کو جیلوں میں ڈالے ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے جو مثبت اور آئینی اقدامات کئے تھے اس بات کی ضرورت ہے کہ آنیوالی حکومت اس تسلسل کو برقرار رکھے ۔ ایک طرف مسلم لیگ ن کی طرف حکومت کی ذمہ داریاں پڑ رہی ہیں تو وہیں ان پر مشکلات کا پہاڑ بھی آنے والا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں