صدر مملکت آصف علی زرداری کی جانب سے عمران خان کے لئے نیک جذبات اور خیر سگالی کا پیغام لے کر آئے ہیں: میاں منظور احمد وٹو

485560_420264734747020_1032554831_n

صدر پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب میاں منظور احمد وٹو نے کہاہے کہ انتخابی رنجشیں اور جذباتی نعرے بازی الکشن کے بعد بھلا دینی چاہئیں۔عمران خان قومی لیڈر کے طور پر ابھر کر سامنے آئے ہیں ہم ان کے لئے نیک خواہشات رکھتے ہیں اور انہیں عوام کی جانب سے ملنے والے مینڈیٹ کا احترام کرتے ہیں ۔شوکت خانم ہسپتال لاہور میں چئیرمین تحریک انصاف عمران خان کی عیادت کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوٰے انہوں نے کہاکہ وہ صدر مملکت آصف علی زرداری کی جانب سے عمران خان کے لئے نیک جذبات اور خیر سگالی کا پیغام لے کر آئے ہیں ، انہو ں نے میڈیا کو بتایا کہ انہیں ابھی آرام کی ضرورت ہے ، اللہ انہیں صحت کاملہ عطا کرے ، میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ الیکشن اور ہارجیت جمہوری عمل کا حصہ ہے ، انہوں نے مثال دیتے ہوئے کہا کہ عالمی جنگ جیتنے والے برطانوی وزیر اعظم سرونسٹن چرچل بھی الیکشن میں ناکام رہے تھے ، انہو ں نے کہا کہ ہم اپنی غلطیوں اور تجربات سے سبق سیکھتے ہیں ، ہمیں بھی اپنی کوتاہیوں کا احساس ہے اور اصلاح کا موقع ملا ہے ، ہم نئے عزم سے پارٹی کو ازسرنو فعال کرینگے اور عوامی خدمت کا تسلسل برقرار رہے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ پیپلز پارٹی نے توانائی بحران کے حل کے لئے نئے پاور پراجیکٹس پر کام شروع کرا دیا تھا ۔انھوں نے کہا۔ کہ کوئلہ سے بجلی پیدا کرنے کا منصوبہ بنایا بھاشا ڈیم اور مونجی ڈیم پر کام کروایا۔انھوں نے کہا امید ہے کہ نئی منتخب جمہوری حکومت ان منصوبوں کو جاری رکھے گی ۔انھوں نے کہا صرف اس وجہ سے ان منصوبوں پر کام نہیں روکنا چا ہئیے کہ یہ پیپلز پارٹی کے منصوبے ہیں اور ان کی بروقت تکمیل یقینی بنائے گی ، میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پاک ایران گیس معاہدہ بھی بروقت مکمل ہونا چاہئے اس سے لوڈشیڈنگ ختم ہو گی ، ایک سوال کے جواب میں انہو ں نے کہا کہ پیپلز پارٹی قومی سیاس سے منفی رحجان کو ختم کرنا چاہتی ہے اور آنے والے پانچ برسوں میں سنجیدہ ، مثبت ، تعمیری اور موثر اپوزیشن کا عملی نمونہ پیش کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی سنجیدہ ، مثبت ، تعمیری اور موثر اپوزیشن کا عملی نمونہ پیش کرے گی ۔انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی اور عوام نے جمہوریت کے لئے بہت قربانیاں دی ہیں جن کی بدولت پاکستان میں جمہوریت جڑیں پکڑ رہی ہے۔ پیپلز پارٹی کے قائدین اور کارکنوں نے اپنے لہو سے جمہوریت کی آبیاری کی ہے اسی لئے حالیہ انتخابات میں منظم دھاندلی کے باوجود ہم نے جمہوری استحکام کے لئے انتخابی نتائج کو تسلیم کر لیا ہے ۔ اس موقع پر پیپلز پارٹی کے رہنما تنویر اشرف کائرہ ، منیر احمد خان ، دیوان محی الدین ، اورنگزیب برکی ، عمر شریف بخاری اور دیگر قائدین بھی میاں منظور احمد وٹو کے ہمراہ تھے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں