نواز شریف کے طریقوں سے لگتا ہے کہ وہ پرانی غلطیاں پھردہرائیں گے: میاں منظور وٹو

485560_420264734747020_1032554831_n

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور وٹو نے کہا ہے کہ میاں محمد نواز شریف نے اپنی گذشتہ دو حکومتوں کی کابینہ ٹیم کو ایک بار پھر چن لیا ہے،یہ وہی لوگ ہیں جو ان کی کچن کیبنٹ کا حصہ تھے۔لاہورسے جاری بیان میں انہوں نے امید ظاہر کی پرانی ٹیم پرانی کارکردگی نہیں دہرائے گی تاہم میاں نواز شریف کے طریقوں سے لگتا ہے کہ وہ پرانی غلطیاں پھردہرائیں گے۔میاں منظور وٹو کا کہنا تھا کہ نواز شریف سے لوگ بہتر کارکردی کی توقع کر رہے ہیں اب انکے پاس کوئی جواز نہیں کہ وہ ملکی حالات بہتر نہ کر سکیں۔
دو ہزار آٹھ میں پیپلزپارٹی آزاد اور ق لیگ کے اراکین کے ساتھ پنجاب میں حکومت بناسکتی تھی لیکن میثاق جمہوریت پر عملدرآمد کرتے ہوئے ایسا نہیں کیا۔ ماڈل ٹاؤن لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میاں منظور وٹو نے کہا کہ پیپلزپارٹی وفاق میں بھر پور اپوزیشن کا کردار ادا کرے گی، حکومت کی اچھی بات کی حوصلہ افزائی، کمزوریوں کی نشاندہی کرینگے۔جتنا حکومت کا رول ہے، اتنا اپوزیشن کا بھی ہے۔
لاہور میں اپنی رہائشگاہ پر دیئے گئے ظہرانے کے موقع پرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے منظور وٹو کا کہنا تھا کہ ن لیگ کو جتنا مینڈیٹ ملا ہے، اب اس کے پاس عوامی مسائل حل نہ کرنے کا کوئی عذر نہیں بچا۔ انہوں نے کہا کہ اگر مسلم لیگ ن پچھلی حکومت کے پروگرام کو جاری رکھے تو دو سے تین سال میں بجلی بحران پر قابو پا سکتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے جمہوری انداز میں اقتدار منتخب نمائندوں کو منتقل کیا، پیپلز پارٹی نے پاک ایران گیس پائپ لائن، ہائیڈرل پاور پراجیکٹ سمیت متعدد منصوبے شروع کیے، اب ن لیگ کی حکومت کو ان منصوبوں کو پایہ تکمیل تک پہنچا کر تین سال میں لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کریں۔ ایک سوال پر میاں منطور وٹو نے کہا کہ چاروں صوبوں میں مختلف جماعتوں کی حکومت ہے، اب صوبائی حکومتوں کو عوام کی توقعات کے مطابق مسائل حل کرنے چاہیں۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں