اپوزیشن کی تعداد اب نیشنل اسمبلی میں بڑھ گئی ہے، نئے مینڈیٹ کی ضرورت ہے: بلاول بھٹو زرداری کی اپوزیشن راہنماؤں کے ہمراہ اہم پریس کانفرنس #AwaamDushmanBudget

اسلام آباد: متحدہ اپوزیشن نے حکومتی بجٹ کو مسترد کردیا ہے،مشکل وقت میں جب عوام کو ریلیف دینے کی ضرورت تھی تو ان پر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھا کر ناقابل برداشت بوجھ ڈال دیا گیا ہے،اس سے مزید مہنگائی کا طوفان آئے گا،حکومت کے اتحادی ان کو چھوڑ کر جارہے ہیں،اب ان کا آخری وقت آگیا ہے،اس سے پہلے تباہ کن حکومت نہیں دیکھی،یہ ساری ٹیم ہی سلیکٹڈ ہے،آل پارٹیز کانفرنس بجٹ سے پہلے کروانی تھی لیکن اپوزیشن لیڈر کی صحت خراب ہونے کی وجہ سے نہیں کروا سکے،حکومت نے کورونا وائرس کے حوالے سے ڈبلیو ایچ او کی تجاویز پر عمل نہیں کیا،اگر یہ حکومت رہی تو عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوگا،نئے مینڈیٹ کی ضرورت ہے۔اپوزیشن کی تعداد اب نیشنل اسمبلی میں بڑھ گئی ہے،سینیٹ الیکشن میں دھاندلی کروائی گئی لیکن نیشنل اسمبلی میں دھاندلی نہیں ہوسکتی۔

ان خیالات کا اظہار پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری،مسلم لیگ کے مرکزی رہنما خواجہ آصف،جے یو آئی (ف) کے اکرم درانی اور جماعت اسلامی کے میاں اسلم نے مشترکہ پریس کانفرس کرتے ہوئے کیا۔چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ متحدہ اپوزیشن نے حکومتی بجٹ کو مسترد کردیا ہے اور اس بجٹ نے پورے پاکستان کی عوام کو متحد کردیا ہے اور حکومت کے خلاف متفقہ طور پر اس بجٹ کو مسترد کرتے ہیں۔

حکومت نے عوام کو ریلیف دینے کی بجائے مزید بوجھ ڈال دیا ہے،پٹرولیم لیوی کا غیر قانونی نوٹیفکشین کیا گیا،بجٹ میں کہتے تھے کہ ہم قیمتیں کم کر رہے ہیں لیکن عوام پر پٹرول بم گرا دیاگیا۔انہوں نے کہا کہ بجٹ کے حوالے سے اپوزیشن رہنما¶ں سے رابطہ کیا گیا اور آل پارٹیز کانفرنس کرنے کے حوالے سے مشاورت کی گئی لیکن اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کی صحت کے خرابی کے باعث بجٹ سے پہلے آل پارٹیز کانفرنس نہیں کروا سکے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ جب کورونا کی وبا آئی تو ہم نے کہا کہ اس وبا پر ہم کوئی اختلاف نہیں کرتے اور ملکر اس کا مقابلہ کرتے ہیں لیکن وزیراعظم نے اس حوالے سے ہم سے کوئی مشاورت نہیں کی،یہ جمہوریت اور معیشت کیلئے خطرناک اور صحت کے حوالے سے بھی خطرہ بن گیا ہے،اب ملکر فیصلہ کرنا ہوگا کہ اس مشکل حالات کا کیسے سامنا کرنا ہے اور ملکر عوام کی زندگیوں کو بچانا ہے۔انہوں نے کہا کہ اب اپوزیشن کی تعداد نیشنل اسمبلی میں بڑھ گئی ہے،شہبازشریف بیماری کی حالت میں بھی عمران خان کا پسینہ نکال رہے ہیں۔آٹے کا بحران پھر سے آرہا ہے،پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں کم کیں اور پٹرول مارکیٹ میں شارٹ ہوگیا اور اب قیمتیں بڑھا کر عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالا گیا ہے،ایسی صورتحال میں انتخابات مشکل ہیں،پاکستان کے مسائل کا حل جمہوریت میں ہے،18ویں ترمیم سے اسمبلی کو تحفظ ملا،سینیٹ الیکشن میں دھاندلی کروائی گئی لیکن نیشنل اسمبلی میں دھاندلی نہیں ہوسکتی،عوام اب تبدیلی چاہتی ہے۔

مسلم لیگ(ن) کے مرکزی رہنما خواجہ آصف نے کہا کہ اس مشکل وقت میں جب ملک میں کورونا وائرس جیسی وبا کا راج ہے،اس وبا کی وجہ سے ہزاروں جانیں چلی گئیں،کاروبار بند ہوگئے،معیشت تباہ ہوگئی اور عوام کیلئے تمام دروازے بند کردئیے گئے ہیں،حکومت نے ریلیف دینے کی بجائے عوام پر ناقابل برداشت بوجھ ڈال دیا ہے۔پہلے کہا گیا کہ ہم پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں کم رہے ہیں اور کچھ دنوں بعد عوام پر پٹرول بم گرا دیاگیا،اس سے مہنگائی کا طوفان آئے گا۔انہوں نے کہا کہ متحدہ اپوزیشن بجٹ کو مسترد کرتی ہے اور عوام کی رائے کو ترجیح دے گی،گزشتہ ایک ماہ سے اپوزیشن کے ممبران قومی اسمبلی میں حکومتی بجٹ کے خلاف لڑ رہے ہیں ان کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں،حکومت کا آخری وقت آگیا ہے،ان کے اتحادی ان کو چھوڑ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کو گھر بھیجنے کیلئے غیر آئینی طریقہ اختیار نہیں کیا جائے گا،اب نئے مینڈیٹ کی ضرورت ہے،اب اس حکومت کا یہ تسلسل رکھنا بہت مشکل ہوگیا ہے۔چیئرمین سینیٹ کے الیکشن کا چھوٹا مسئلہ تھا لیکن یہ تو پوری قوم کا مسئلہ ہے،اس کو ملکر حل کیا جاسکتا ہے۔جماعت اسلامی کے مرکزی رہنما میاں اسلم نے کہا کہ حکومت نے جو بجٹ پیش کیا یہ الفاظ کا گورکھ دھندہ ہے،ایک بدترین بجٹ پیش کیا گیا ہے،اس میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوںاور پنشن میں اضافہ نہیں کیا گیا،عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالا گیا ہے،جب پٹرول سستا تھا تو عوام کو مل نہیں رہا تھا،اپوزیشن ملکر پاکستانی عوام کو بچائے گی۔ج
ے یو آئی ف کے مرکزی رہنما اکرم درانی نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر بیمار ہیں،اللہ پاک انہیں صحت دے ان کی جگہ خواجہ آصف نمائندگی کر رہے ہیں،اپوزیشن ایک پیج پر ہے،اس سے برا وقت پاکستان پر نہیں آسکتا ،پاکستانی معیشت کورونا وائرس کی وجہ سے تباہ ہوچکی ہے،ساری ٹیم سلیکٹڈ ہے،اپوزیشن کے ساتھ حکومتی رویہ ایسا ہے کہ سوچا نہیں جاسکتا،موجودہ حالات میں ہر آدمی کی چینخیں نکل رہی ہیں،ادارے بند کئے جارہے ہیں،پوری اپوزیشن ملکر اس ظالمانہ حکومت سے چھٹکارا حاصل کرے گی

اپنا تبصرہ بھیجیں