ملتان میں یوم سیاہ پر احتجاجی مظاہرہ – ریاض حسین بخاری

10426308_756937111036008_3475829176645373632_n

اس بھیانک دن یعنی 5جولائی کو پاکستان پیپلز پارٹی ہمیشہ سے یوم سیاہ کے طور پر مناتی ہے اس سلسلے کو جاری رکھتے ہوئے اس مرتبہ بھی یہ دن پورے پاکستان میں یوم سیاہ کے طور پر منایا گیا۔ ملتان میں پاکستان پیپلز پارٹی نے دن 11بجے چوک کچہری میں ایک احتجاجی مظاہرہ کیا۔ جس میں ملک محمد عامر ڈوگر، خواجہ رضوان عالم، خالد حنیف لودھی، خورشید خان، ایم سلیم راجہ، مرزا عزیز، اکبر بیگ، غیاث الحق شیخ، صفدر سرسانہ، صائمہ عامر خان، سید عا>رف شاہ، ریاض حسین بخاری سمیت کارکنوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی جس میں آمریت کے خلاف شدید نفرت کا اظہار کیا اور جمہوریت کو اس کی اصل روح کے مطابق پاکستان کے سارے مسائل کاحل قرار دیا ۔ مظاہرہ میں ضیاء حنیف اور اس کی باقیات پوشیدہ تنقید کا تعصبانہ بتایا گیا اور اس بات کا اعادہ کیا گیا کہ جمہوریت کوہر قسم کی سازشوں سے بچایا جائے گا۔ مظاہرہ میں پاکستان پیپلز پارٹی کی جاسوسی کرنے پر امریکہ سے سخت احتجاج کیا گیا اور اس سے معافی کا مطالبہ کیا گیا۔
مظاہرے کے بعدع دن تین بجے جناب ایم سلیم راجہ کے دفتر میں ایک مذمتی اجلاس ہوا جس میں مقررین نے جناب ذوالفقار علی بھٹو شہید کو زبردست خراج تحسین پیش کیا۔ اور ضیاء آمریت کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس بات کا اظہار کیا گیا کہ پاکستان کے آج وسائل ہیں۔ ان کی بنیاد ضیاء آمریت کے دور میں رکھی گئی تھی اور انشاء اللہ جب تک سانس باقی ہے آج کے دن کو یوم سیاہ کے طور پر منایا جاتا رہے گا اسی دور کے فتنے مثلاً بیرون کی لعنت، کلاشنکوف کلچر، لسانی تعصب اور مذہبی منافرت اسی دور کی پیداوار ہیں جس کو بعد کے آمر نے بھی جاری و ساری رکھا معززین کے مختصر خطابات کے بعد جناب ملک عامر ڈوگر نے مختصر مگر پر مغز اور یعنی مختصر خطاب کیا جس میں بھٹو شہید کے فلسفہ کوہر صورت زندہ رکھنے کی اپیل کی گئی انہوں نے اپنی تقریر کا خطاب اسی سفر کے ساتھ کیا اور جس کے بعد یہ اجلاس ختم ہوگیا۔ ملک عامر ڈوگر نے آخر میں شعر پڑھا ۔
کتنے بے درد ہیں صر صر کو صبا کہتے ہیں
کیسے ظالم ہیں کہ ظلمت کو ضیا کہتے ہیں
اس اجلاس کے بعد ملتان پریس کلب کے سامنے بھی ایک بھرپور احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں