حکومت انرجی بحران ختم کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو گئی ہے: سینیٹر سعید غنی

Aaj-With-Reham-Khan-5th-June-201338938

کراچی: پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما و انچارج میڈیا سیل سینیٹر سعید غنی نے کہا ہے کہ وفاقی وزیر پانی و بجلی خواجہ آصف کو بجلی کا معاملہ اللہ تعالیٰ پر چھوڑنے کی بجائے عوام سے جھوٹ بول کر ووٹ لینے پر اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدینا چاہیے۔ پی پی پی میڈیا سیل سے جاری کئے گئے بیان میں سینیٹر سعید غنی نے خواجہ آصف کی پریس کانفرنس لوڈشیڈنگ پر قابو نہ پانے کا اعتراف پر تبصرہ کرتے ہوئے اسے عذرگناہ بدترازگناہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ ن نے 2013 کے انتخابات میں لوڈشیڈنگ چھ ماہ میں ختم کرنے کے وعدے پر عوام سے ووٹ لئے اور حاکم اعلیٰ پنجاب شہباز شریف پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں خود لوڈشیڈنگ کے خلاف مظاہروں کی قیادت کررہے تھے اور عوام کو بھڑکا کر واپڈا کے دفتروں اورپی پی پی کے اراکین اسمبلی کے گھروں پرحملے کروا رہے تھے اور پیپلز پارٹی کی حکومت پر تنقید کے ساتھ ساتھ منفی پروپیگنڈہ بھی کررہے تھے اوریہ کہہ رہے تھے اگر وہ چھ ماہ میں لوڈشیڈنگ ختم نہیں کرسکے تو اپنا نام بدل دینگے اور آج خواجہ آصف کہہ رہے ہیں وہ لوڈشیڈنگ کے خاتمے کا وقت نہیں دے سکتے۔اسی بنیاد پر انہوں نے انتخاب لڑا اور عوام کو لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا لولی پوپ دیا، انہوں نے کہا کہ وزیرپانی و بجلی نے رمضان سے پہلے اعلان کیا کہ رمضان کے مہینے میں سحری و افطار کے وقت لوڈشیڈنگ نہیں ہوگی، اب اپنے وعدے سے پھر گئے ہیں اور اس بات کااعتراف کر لیا ہے کہ حکومت رمضان میں لوڈشیڈنگ ختم نہیں کر سکتی۔انہوں نے کہا کہ عوام رمضان کے مہینے میں بھی سحر وافطار کے وقت غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے سخت اذیت میں مبتلا ہیں اور سحرو افطار اندھیرے میں کرنے پر مجبور ہیں۔ سینیٹر سعید غنی نے کہا کہ موجودہ حکومت انرجی بحران ختم کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو گئی ہے نہ ہی اس حکومت میں انرجی بحران ختم کرنے کی صلاحیت ہے، انرجی بحران مزید بڑھ رہا ہے ۔ انہوں نے حکومت کو مشورہ دیا کہ اگر وہ عوام کو اعلانیہ و غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سے نجات نہیں دلا سکتے اور اپنے انتخابی منشور میں عوام سے کئے گئے وعدوں پر عمل نہیں کر سکتے تو انہیں استعفیٰ دیدینا چاہیے۔

Source : Issued by Lateef Mughal Member Media Cell PPP Sindh

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں