غلطی پر غلطی سے حکومت کی چھٹی ہوئی تو پی پی ذمہ دار نہیں ہوگی، میاں منظور وٹو

218860_l

لندن (آصف ڈار) پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر اور پنجاب کے سابق وزیراعلی منظور وٹو نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت ایک غلطی کے بعد دوسری غلطی کرتی جارہی ہے، اگر ان غلطیوں کی وجہ سے اس کی چھٹی ہوئی تو پیپلزپارٹی ذمہ دار نہیں ہوگی اور نہ ہی حکومت کو بچا سکے گی، ان خیالات کااظہارمنظور وٹو نے جنگ لندن سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی چاہتی ہے کہ ملک میں جمہوریت چلتی رہی، یہی وجہ ہے کہ وہ عمران خان کی طرح مڈٹرم الیکشن کا مطالبہ نہیں کررہی مگر حکومت اس سلسلے میں خود اپنے خلاف اقدامات کررہی ہے، جنگلے ہٹانے کے بہانے لاہور میں 14 افراد کو ماردیا جائے گا تو پھر حکومت کیسے مستحکم رہے گی، منظور وٹو نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ پیپلزپارٹی ملک میں جمہوریت کا استحکام چاہتی ہے اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں حکومت اور فوج کے ساتھ ہے، انہوں نے کہا کہ پی پی کے چےئرمین بلاول بھٹو زرداری واضح انداز میں کہہ چکے ہیں کہ فوج اور پاکستانی عوام پر حملے کرنے والے مسلمان ہیں اور نہ ہی پاکستانی ہیں، انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ سابق صدر آصف علی زرداری نے بجا طورپر موجودہ حکمرانوں کو یہ پیغام دیا ہے کہ وہ عوام کے نمائندے ہی رہیں، بادشاہ بننے کی کوشش نہ کریں، پنجاب میں پیپلزپارٹی کی ناکامی پر ایک سوال کے جواب میں منظور وٹو نے کہا کہ پنجاب میں پی پی کی کارکردگی 1997ء کے انتخابات کے مقابلے میں بہتر ہے اس کی صوبائی اسمبلی میں8 اور قومی اسمبلی میں 43/44 سیٹیں ہیں، جب کے اس وقت ان کی تعداد صوبے میں 3 اور مرکز میں 18 تھی۔ منظور وٹو نے کہاکہ وہ لندن میں سابق صدر آصف علی زرداری کے ساتھ مل کر پنجاب کے لئے پارٹی حکمت عملی بنائیں گے اور اس حکمت عملی کے تحت وہ آئندہ انتخابات میں پنجاب میں بھرپور کامیابی حاصل کریں گے۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ انتخابات کے بعد پنجاب میں تینوں ضمنی انتخابات پیپلز پارٹی نے جیتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اس وقت صورتحال 1997ء سے مختلف ہے۔ آج سندھ، آزادکشمیر اور گلگت بلتستان میں پی پی کی حکومتیں ہیں جبکہ سینیٹ میں بھی پی پی کا چیئرمین اور اکثریت ہے۔

Source: Daily Jang

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں