شہباز شریف کوجنوبی پنجاب کی بدحالی نظر نہیں آتی: عامر ڈوگر

59153-pppp-amir

ملک محمد عامر ڈوگر نے اپنی پریس ریلیز میں کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ شہباز شریف صاحب ملتان چلڈرن ہسپتال کا بھی کبھی کبھار دورہ کریں تو انکو معلوم ہو گا کہ لاہور کے چلڈرن ہسپتال کے علاوہ بھی باقی پنجاب اور بالخصوص جنوبی پنجاب کے ہسپتالوں کا کتنا برا حال ہے ۔ ملتان چلڈرن ہسپتال میں ایک وقت میں ایک بستر پر 4سے 5بچے زیر علاج ہوتے ہیں ۔ ڈاکٹر عملہ اودیات ناکافی ہیں ۔ اور اسی طرح میں وزیر اعلیٰ کو دعوت دونگا کہ دورہ پر وزیر الہی انسٹیوٹ آف کا رڈیا لوجی کا دورہ بھی کریں۔ جہاں آپ 2009 ؁ میں آئے تھے اور ہسپتال کی اپ گریڈ یشن سمیت بہت سے اعلانات کئے جو کہ باقی اعلانات کی طرح سیاسی اور جھوٹے وعدے نکلے کارڈیا لوجی ہسپتال میں نیا آئی سی یو وارڈ ۔ نیا ایمرجنسی وارڈ کی توسیع جیسے کئی دیگر مسائل ہیں جو وزیر اعلیٰ کی خصوصی توجہ کے طلبگار ہیں ۔ نشتر ہسپتال ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال اور نیا ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال بھی ابھی تک چالو نہیں کیا گیا حالانکہ اس کی عمارت کئی سالوں سے مکمل ہے اور تقریباً یہی صورتحال پورے جنوبی پنجاب کے دیگر ہسپتالوں کی ہے۔ مگر وزیر اعلیٰ پنجاب کو جنوبی پنجاب کا کوئی ہسپتال نظر نہیں آتا۔
وہ صرف آئے اور لاہور کے ہسپتالوں کا دورہ تو کرتے رہتے ہیں لیکن جنوبی پنجاب کی بدحالی ان کو نظر نہیں آتی۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعلیٰ صاحب کو بس ایک ہی دھن سوار ہے کہ ملتان میں جنگلہ بس بناتی ہے جس کے ذریعے اربوں کا کمیشن کھانا ہے اور پورے ملتان شہر کو قبر ستان بنا دینا ہے اور لوگوں کو بیروزگار کرتا ہے۔ (40) ارب روپیہ میٹرو بس سروس کی بجائے بجلی کی لوڈ شیڈنگ کو ختم کرنے میں لگایا جائے۔ شاید وہ لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کے اپنے بلند و بانگ وعدوں کو فراموش کر چکے ہیں ۔ آج شدید ترین لوڈ شیڈنگ کے موقع پر قوم ان کو اپنے انتخابی وعدے یاد کرواتی ہے۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں