Tanvir Ashraf Kaira advises political leaders not pave the ground for the dictatorship

12-22-2010_7515_l_u
The political leadership of the country should concentrate on saving democracy without fail because its derailment will push the king and pawns in the same box indiscriminately, said Tanvir Ashraf Kaira, Secretary General PPP, Punjab, in a statement issued from here today.

He handed out an advice to the fighting political parties that they should not pave the ground for the dictatorship and later on cry for the restoration of democracy after going through the ordeal of dictatorial rule along with the people as a consequence of their poor judgment. It makes sense that they should facilitate in saving democracy now than clamoring for its restoration afterwards, he added.

They will be held responsible for pushing the whole nation under the yoke of dictatorship for the next number of years and the resultant national political and social degeneration, he observed.

He criticized the role of the couple of the parties who were determined to vitiate the political environment in the country with the sole aim of fishing from the resultant troubled waters, caring less of the negative fall out of their insidious role.

He appreciated the role of the former President Asef Ali Zardari who has sprung into action and had contacted the leaders of all spectrums with the aim of saving democracy and the constitutionalism.

He expressed the confidence that his political wisdom would make a qualitative difference in cooling down the political temperature leading to dissipating dangers to democracy for which the people of Pakistan had rendered countless sacrifices.

He called upon the PML(N) leaders and its government not to resort to excessive pre-emptive arrests and avoid the use of brutal force against political opponents because such tactics would add fuel to the fire making it difficult to control it and saveAA the edifice of democratic dispensation.

He said that the PTI and the PML (N) should demonstrate a degree of flexibility adding they must gave serious consideration to the proposals presented to them by the leaders of the political parties who were keen to save democracy from being derailed at all cost.

ملک کی تمام سیاسی قیادت کو موجودہ بحران پر یہ سمجھتے ہوئے ضرور قابو پانا چاہیے کہ شطرنج کے کھیل کے بعد بادشاہ اور غلام بلاامتیاز ایک ہی صندوق میں بند کر دےئے جاتے ہیں ۔ یہ بات پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے سیکرٹری جنرل تنویر اشرف کائرہ نے آج یہاں سے جاری ایک بیان میں کہی۔ انہوں نے دست و گریباں میں سیاسی جماعتوں کو مشورہ دیا کہ وہ جمہوریت کو بچانے پر اپنی تمام توجہ خلوص نیت سے صرف کریں، اگر ایسا نہ کیا گیا تو کل یہی جماعتیں اکھٹے ہو کر جمہوریت کی بحالی کے لیے ضرور شور مچائیں گی۔ عقل اور سمجھداری اسی میں ہے کہ جمہوریت کو بچایا جائے اور لوگوں کو ڈکٹیٹر شپ کے ممکنہ عذاب سے محفوظ رکھا جائے جو وہ پہلے ہی کافی عرصہ اسے بھگت چکے ہیں۔ تنویر اشرف کائرہ نے کہا کہ اگر جمہوریت کو کچھ ہوا تو تاریخ انکو اسکا ذمہ دار ٹھہرائے گی جو ملک میں سیاسی اور سماجی تنزلی کا باعث بنے۔ انہوں نے ایک دو سیاسی جماعتوں کے کردار کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ یہ جماعتیں ملک میں اپنے مفاد کی خاطر جمہوریت کو نقصان پہنچانے پر تلی ہوئی ہیں اور اس ضمن میں وہ ناپسندیدہ کردار ادا کر رہی ہیں۔ تنویر اشرف کائرہ نے سابق صدر آصف علی زرداری کے کردار کو سراہتے ہوئے کہا کہ اُنکی کوششوں سے ملک کے سیاسی ماحول میں ضرور بہتری آئیگی اور جمہوریت محفوظ رہے گی۔ تنویر اشرف کائرہ نے حکومت پر زور دیا کہ وہ سیاسی مخالفین کو گرفتار کرنے یا انکے خلاف ریاستی طاقت کے استعمال کرنے سے اجتناب کرے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اسکے استعمال سے سیاسی ماحول میں مزید تیزی آئے گی جس سے پرامن سیاسی حل کے حصول میں مشکلات پیش آ سکتی ہیں۔ تنویر اشرف کائرہ نے کہا کہ پی ٹی آئی اور پاکستان مسلم لیگ (ن) دونو ں کو اپنے اپنے رویوں میں لچک پیدا کرتے ہوئے سیاسی قائدین کی تجاویز پر پوری سنجیدگی سے غور کرنا چاہیے کیونکہ یہ جماعتیں ملک میں جمہوریت اور آئین کی بالادستی پر کامل یقین رکھتی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں