Enough is enough says Mian Manzoor Ahmed Wattoo‏

218860_l
Enough is enough, now the government and the contesting parties should back off and let the sanity overtake their self-defeating brinkmanship, said Mian Manzoor Ahmed Wattoo, President Punjab PPP in a statement issued from here.

He appealed to both the parties to show mercy to the nation and let them take a sigh of relief that had been on the tenterhooks for the last many days.

He called upon the Government and the PTI and PAT to listen to the rest of the political leadership of the country and create space for hammering out a mutually agreed formula to break the deadlock for the sake of democracy, constitution and rule of law.

He maintained that no doubt the delay on the part of the government to read the gravity of the situation correctly and of taking action had led to the problematic political situation the country was confronted with.

Mian Manzoor Ahmed Wattoo said that the bigger responsibility was on the shoulders of the government of taking appropriate steps like accepting the demands of the PTI urgently to save the country from plunging into anarchy.

He recalled that PML(N) entered the Red Zone and ransacked the Supreme Court adding lawyers and other political parties also entered the Zone but not like PML(N)

He maintained that Pakistan army was fighting the war of survival of the country adding how naïve and regretful that a section of political parties were getting to each other’s hair at a time when they should be uniting the nation instead of dividing it as national security was at stake.

He referred to the advice of Chairman Bilawal Bhutto Zardari last month in which he appealed to the political parties of all spectrums to shun their political differences for the time being and support the armed forces’ operation in FATA whole heartedly because terrorism posed the biggest threat to the security and independence of the people of this country.

He also urged the rest of the political leadership to give strong message urgently to the warring parties in no uncertain terms that their egoism would not be allowed to run down the constitution and the democracy come what may. Constitution, democracy and rule of law cannot be sacrificed at the altar of their strong likes or dislikes, he observed.

پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے آج یہاں سے جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ لڑائی کی بجائے دانشمندی اور سمجھداری سے معاملات کو سلجھایا جائے۔ انہوں نے احتجاج کرنے والی جماعتوں اور حکومت سے پرزور اپیل کی کہ وہ قوم پر رحم کریں جو کہ پچھلے کئی دنوں سے غیر یقینی کے عذاب میں مبتلا ہے۔ انہوں نے حکومت پی ٹی آئی اور پی اے ٹی سے کہا کہ وہ سیاسی قائدین کے مشوروں پر سنجیدگی سے غور کریں اور کسی ایسے سیاسی حل کو تلاش کرنے میں مدد دیں جس سے آئین ، جمہوریت اور قانون کی بالادستی بدستور قائم رہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ بلاشبہ حکومت کی سستی کی وجہ سے آج حالات اس نہج پر پہنچ چکے ہیں جس سے ہر پاکستانی کو سخت تشویش ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ سب سے زیادہ ذمہ داری حکومت وقت پر ہے کہ وہ جلد ازجلد راست اقدامات کرے تا کہ ملک کو انارکی سے محفوظ رکھا جا سکے۔ میاں منظور احمد وٹو نے یاد دلایا کہ پی ایم ایل (ن) ماضی میں ریڈ زون میں داخل ہوئی تھی جب اُس نے سپریم کورٹ پر حملہ کیا تھا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ وکلاء اور دوسری سیاسی جماعتیں بھی ریڈ زون میں داخل ہوئی تھیں لیکن پی ایم ایل (ن) کی طرح نہیں۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پاکستان اسوقت اپنی بقاء کی جنگ لڑ رہا ہے اور مقام افسوس ہے کہ ہم آپس میں لڑ رہے ہیں اور ہماری خوب جگ ہنسائی ہو رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وقت ایسا ہے جب تمام سیاسی جماعتوں کو قومی وحدت پر توجہ مرکوز کرنی چاہیے نہ کہ اس کو پارہ پارہ کرنے پر تل جائیں ۔ میاں منظور احمد وٹو نے چےئرمین بلاول بھٹو کی سیاستدانوں کی اپیل کا ذکر کرتے ہوئے کہا جسمیں انہوں نے تمام سیاستدانوں سے سیاسی اختلافات کو بھلا کر افواج پاکستان کی حمایت پر زور دیا تھا جو کہ اس وقت وزیرستان میں دہشتگردوں کے خلاف آپریشن میں مصروف ہے ۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ سیاستدانوں کو چاہیے کہ وہ دست و گریباں پارٹیوں کو ایک سخت پیغام دیں کہ کچھ بھی ہو جائے وہ آئین، جمہوریت اور قانون کی بالادستی پر کوئی سودے بازی نہیں کریں گے اور نہ ہی جمہوریت کو پٹڑی سے اترنے دیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں