Tanvir Ashraf Kaira urges investigations of rigging before the demand of resignation

dsc_0075
Secretary General PPP, Punjab, Tanvir Ashraf Kaira has said that the demand of the agitating Party regarding stepping down of the Prime Minister, conditional or otherwise, was not tenable as there was no constitutional provision to this effect.

He said this in a statement issued from here today adding that mere on the basis of allegations the stepping down of the Prime Minister would set a bad precedent with dangerous consequences for the political system, and the political stability in the country would become chimera as a consequence.

He argued that the demand of PTI and PAT for the resignation of the Prime Minister was clearly against the imperatives of the administration of justice because these parties were determined to juggernaut as a prosecutor, a jury and an executing entity at the same time.

He urged the government and the warring parties to show restraint and sanity and talk out the mechanism to investigate the allegations of rigging in the first place. The allegations are serious by any measure, he added.

The fate of the incumbent Prime Minister should be determined by the outcome of the impartial investigation of the allegations adding before that the insistence of punishment would be deemed as sheer victimization.

He recalled that the allegations of rigging were widespread and the PPP had also expressed its reservations but accepted the results for the sake of the continuity of the political process.

He underscored the importance of evolving the mechanism to ensure electoral process as free, fair and transparent without an iota of doubt adding that the Parliamentary Reforms Committee should undertake it as its top priority considering it as the national demand.

Tanvir Ashraf Kaira made it clear that the PPP and its leadership would not let democracy go down in the country come what may because democracy and the bright future of Pakistan, the federation and the nation were interlinked.

پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے سیکرٹری جنرل تنویر اشرف کائرہ نے آج یہاں سے جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ احتجاج کرنیوالی جماعتوں کا وزیراعظم سے مشروط یا کسی اور شکل میں استعفیٰ کا مطالبہ آئین کے منافی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ صرف الزامات کی بنیاد پر وزیراعظم سے استعفیٰ کا مطالبہ کرنا ملک میں ایک ایسی غلط روایت ڈالے گا جس سے ملک میں سیاسی استحکام ایک خواب بن کر رہ جائے گا۔ تنویر اشرف کائرہ نے پی ٹی آئی اور پاکستان عوامی تحریک کے استعفیٰ کے مطالبے کو انصاف کے تقاضوں کے منافی قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ دونوں جماعتیں خود ہی مدعی، جیوری اور فیصلوں پر عمل درآمد کرنے کا کردار ادا کرنا چاہتی ہیں ایسا مہذب معاشروں میں نہیں ہوتا۔ انہوں نے حکومت اور احتجاج کرنیوالی جماعتوں پر زور دیا کہ وہ تحمل، رواداری اور سمجھداری کا ثبوت دیتے ہوئے موجودہ سیاسی بحران کو مذاکرات کے ذریعے حل کریں اور سب سے پہلے انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کو کسی منطقی نتیجے پر پہنچائیں کیونکہ الزامات سنگین ہیں۔ تنویر اشرف کائرہ نے کہا کہ موجودہ وزیراعظم کی قسمت کا فیصلہ انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کے نتائج پر چھوڑ دینا چاہیے۔ وزیراعظم کو اس سے قبل استعفیٰ پر مجبور کرنا مناسب نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کو بھی مئی 2013 ؁ء کے انتخابات پر شدید تحفظات تھے لیکن پارٹی کی قیادت نے ملک میں جمہوریت کے تسلسل کی خاطر انکو تسلیم کیا۔ تنویر اشرف کائرہ نے انتخابی عمل میں دوررس اصلاحات لانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے پارلیمانی کمیٹی برائے انتخابی عمل پر مطالبہ کیا کہ وہ اس عمل کو اولین ترجیح دیں کیونکہ یہ ایک قومی مطالبہ بن گیا ہے۔ تنویری اشرف کائرہ نے واضح کیا کہ پیپلز پارٹی جمہوریت پر آنچ نہیں آنے دیگی کیونکہ پارٹی کی قیادت جمہوریت کو روشن اور مضبوط پاکستان کی ضمانت سمجھتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں