Mian Manzoor Wattoo considers PML(N) rallies as ill-conceived decision

218860_l
Mian Manzoor Ahmed Wattoo, President Punjab PPP, has rejected PML(N)’s decision in bringing out rallies in the country as ill-conceived and self-defeating. He said this in a statement issued from here today.

He maintained that the government rallies would tantamount to damping the political burning fire by throwing gasoline on it adding it would aggravate the volatile political environment in the country.

The ruling party must not vitiate the environment instead undertake all possible steps to assuage the ongoing confrontation between the parties who had made the nation hostage of their egoes.

He said that the ruling Party was the big stake holder in the system and the confrontation migh benefit the opposition but surely undermine the political system in the country.

He predicted that the bloody clash between the agitating parties leading to loss of lives would pose the greatest danger to democracy and the inevitability of political redundancy of the fighting political parties.

He called upon the government to register FIR against those who had been accused as responsible for murdering the PAT workers at Model Town and injuring many by bullet shots. Delay in this regard is raising the question of the indiscriminate application of law in the province of Punjab, he observed.

Mian Manzoor Ahmed Wattoo said that the PPP woul not compromise on the future of democracy come what may adding that the Party leadership was acutely concerned on the prevailing political situation in the country.

He said that the former President Asef Ali Zardari’s recent visit to Lahore where he met important leaders were reflective of his keenness to resolve the conflict through dialogue in the interest of the federation, democracy and the constitution.

While referring to the CEC meeting of the Party held in Karachi yesterday Mian Manzoor Ahmed Wattoo said that the decision to from a Committee mandated to get in touch with all the stakeholders in order to defuse the political deadlock reflected the sincerity of the Party and its leadership to extricate the nation out of the crippling stalemate.

پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے مسلم لیگ (ن) کی ریلیاں نکالنے کے فیصلے کو دور اندیشی سے عاری قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے موجودہ سیاسی صورتحال اور خراب ہو گی جس سے بحران کے سیاسی حل کے تلاش میں مشکلات پیش آسکتی ہیں۔ یہ بات انہوں نے آج یہاں سے جاری ایک بیان میں کہی۔انہوں نے کہا کہ ردعمل کے جلوس جلتی پر تیل ڈالنے کے مترادف ثابت ہوں گے۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ حکمران آگ کو پٹرول سے بجھانا چاہتے ہیں۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ حکمران جماعت کو حالات مزید خراب نہیں کرنے چاہئیں اور ایسے تمام اقدام اٹھانے چاہئیں جس سے حالات کو معمول پر لانے میں مدد ملے تا کہ قوم کو غیر یقینی کے عذاب سے نجات ملے جس نے روز مرہ کی زندگی کو مفلوج کر کے رکھ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکمران جماعت موجودہ سیاسی نظام میں سب سے بڑی سٹیک ہولڈر ہے اور محاذ آرائی کی پالیسی اسکے لیے خطرناک ثابت ہو سکتی ہے اس لیے اسے محاذ آرائی سے بچنا چاہیے۔ میاں منظور احمدو ٹو نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے ملزموں کے خلاف فوری طور پر ایف آئی آر درج ہونی چاہیے کیونکہ انہوں نے ناحق کئی جانوں کا خون کیا۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی جمہوریت، آئین اور قانون کی بالادستی پر کبھی بھی سودے بازی نہیں کریگی اور انکے تحفظ کو ہرقیمت پر یقینی بنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ سابق صدر آصف علی زرداری کا حالیہ دورہ لاہور اُنکی موجودہ صورتحال پر تشویش کا مظہر ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس دوران انہوں نے اہم سیاسی شخصیات سے ملاقاتیں کیں تا کہ موجودہ بحران کو پر امن طریقے سے حل کیا جاسکے اور جمہوریت کے مستقبل کو محفوظ بنایا جاسکے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ حالیہ پیپلز پارٹی کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس میں ایک کمیٹی بنائی گئی ہے جسکو یہ ذمہ داری سونپی گئی ہے کہ وہ تمام سیاسی جماعتوں سے رابطے کرے اور سیاسی حل تلاش کرنے کے لیے ہر ممکن کوششیں کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں