Sindh’s Mahar group to join PPP


KARACHI: One of upper Sindh’s leading political groups, the Mahar Group, which has been in political isolation for the last four years, has finally decided to join the Pakistan Peoples Party.
The group negotiated its terms and conditions with co-chairperson of the Pakistan Peoples Party (PPP) President Asif Ali Zardari in Karachi Sunday evening.
The meeting, which continued for more than an hour, decided that the Mahar group would soon formally announce its induction in the PPP at a public gathering in Khan Garh Mahar, likely to be attended by President Zardari.
Talks between the two sides had been ongoing for almost a month. Ali Nawaz Khan aka Raja Mahar, Sardar Muhammad Bux Mahar, Ali Muhammad Mahar, Sardar Alo Gohar Mahar, and Nasir Shah held the decisive meeting with the president on Sunday.
The group, which dominates Ghotki district and parts of other districts in upper Sindh, told President Zardari that they would contest elections from their respective constituencies where they already enjoy huge support; while, a joint candidate will be nominated with mutual consensus in other areas which do not come under their stronghold.
According to sources, the president accepted the Mahar group’s condition and directed the provincial party leadership to make all possible arrangements for the public gathering.
He also directed Sindh Chief Minister Syed Qaim Ali Shah to ensure party discipline as the group had complained of a ‘propaganda’ launched against them during the past week.
The Mahar group was also constantly in touch with other political parties, including the Pakistan Muslim League-Nawaz and the Functional League.
PPP’s district leadership and workers, however, are not in favour of the Mahar group joining the party, and had held several protests against the move.
President Zardari directed Ghotki’s leaders to avoid such a negative drive.
Published in The Express Tribune, September 3rd, 2012.

Sindh’s Mahar group to join PPP” ایک تبصرہ

  1. سندھ کی سیاست میں بڑابریک تھرو،مہربرادران پی پی میں شامل
    کراچی: سندھ کی سیاست میں ایک بڑے بریک تھروکے طورپرگھوٹکی کے معروف مہر سرداران نے اتوار کوبلاول ہاؤس میں صدرزرداری سے ملاقات کرکے پیپلزپارٹی میں شمولیت کا اعلان کردیا۔
    تاہم اس بات کا فیصلہ ہوا ہے کہ صدرمملکت جلد مہر سرداران کی دعوت پرگھوٹکی کادورہ کرینگے جہاں پرمہر سرداران جلسہ عام میں پیپلزپارٹی میں شمولیت کاباضابطہ اعلان کرینگے،پیپلز پارٹی ضلع گھوٹکی کے رہنما اور کارکنان مہربرادران کی پیپلز پارٹی میں شمولیت کے خلاف گزشتہ ہفتے سے احتجاج کررہے تھے جن کا موقف تھاکہ سردار برادران نے ہمیشہ پیپلز پارٹی کی پیٹھ میں چھرا گھونپاہے اس لیے ان کو پارٹی میں شامل کرکے پرانے کارکنان کی قربانیوںکوہرگز ضائع نہیں کیاجائے۔
    تاہم مقامی قیادت کی خواہش کے برعکس اتوار کو سردار علی گوہر خان مہر،سردار محمد خان مہر، سردار علی نواز خان مہر اورسکھر کے سابق ناظم سید ناصر حسین شاہ پر مشتمل وفد نے بلاول ہاؤس میں صدرزرداری سے ملاقات کی،اس موقع پر ضلع گھوٹکی کی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیاگیا،رکن قومی اسمبلی فریال تالپور اور سکھر سے رکن قومی اسمبلی و وفاقی وزیر سید خورشید شاہ بھی ملاقات میں موجود تھے۔
    صدر آصف علی زرداری کی دعوت پر مہر برادران نے پیپلز پارٹی میں شمولیت اختیار کی تاہم انھوں نے صدرزرداری کو ضلع گھوٹکی کے دورے کی دعوت دی جس کوصدرزرداری نے قبول کر لیا۔دریں اثناپیپلزپارٹی گھوٹکی کے رہنماؤں کے تحفظات کودورکرنے کے لیے وزیر اعلیٰ سندھ سیدقائم علی شاہ اور ایم این اے فریال تالپور کی مشترکہ زیرصدارت پیپلز پارٹی گھوٹکی کا اجلاس وزیر اعلیٰ ہاؤس میں منعقد ہوا۔
    اجلاس میں صوبائی وزیر بلدیات آغا سراج درانی،صوبائی وزیر آبپاشی جام سیف اﷲ دھاریجو، وزیر قانون و جیل خانہ جات محمد ایاز سومرو،جام اکرام اﷲ دھاریجو، قادر بخش کلوڑ سمیت دیگر رہنماؤں نے شرکت کی،اجلاس میں گھوٹکی ضلع کی سیاسی صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا، ضلع گھوٹکی کے پی پی عہدیداروں اورکارکنان نے اس موقع پر کہا کہ گھوٹکی ہمیشہ سے پیپلز پارٹی کا گڑھ رہاہے اس لیے آئندہ انتخابات میں بھی گڑھ ثابت ہوگا،کارکنان نے پی پی قیادت کو یقین دلایا کہ وہ اپنی تمام تر توانائی پارٹی پروگرام کے فروغ کیلیے وقف کردینگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں