Mian Manzoor Wattoo lashes govt on flood in Punjab

10636826_447348732069554_5132824066263695448_o
PML (N) government will fall in days not in weeks if the PPP withdraw its support to the incumbent government, said Mian Manzoor Ahmed Wattoo in a press conference here today.
He further said that the government had to give safe passage to Imran Khan and Dr. Tahir-ul- Qadari to end current political impasse adding only government was in a position to offer such concessions to the PTI and PAT because they were at the receiving end and the government was a deliverer.
To a question, Mian Manzoor Ahmed Wattoo predicted that the government would not fall because almost all the opposition was on its side adding the entire leadership was committed to democracy, constitution and the rule of law. If it falls it will be solely due to its mistakes, he observed.
The extra-constitutional measures for the political change have least acceptance in the country if the latest survey conducted both by outfits of Pakistan or foreign countries are to be believed.
Earlier, in his opening statement, Mian Manzoor Ahmed Wattoo said that the PML(N) successive governments were totally responsible for the losses of lives and properties inflicted due to the devastating floods in the past and the present because they were in power for the last thirty years in Punjab
He said that the apathy and inaptness of the Punjab Government was unpardonable because it did not care for the implementation of the Flood Commission Report of 2010 and as such the government was responsible for the losses occurred due to the floods and torrential rains.
He pointed out that the Punjab Chief Minister was notorious for playing to the gallery as each time the Chief Minister had photo session in the rain water wearing the same outfit and the long shoes. He forgets the tall promises soon after and his platitudes never followed by the coherent strategy to improve the sewerage system of the major cities of the province.
While expressing Party leadership and his deep condolences and sympathies to the bereaved families who lost their loves ones and live stock, Mian Manzoor Ahmed Wattoo demanded that the government should immediately announce and extend immediate financial relief to the villagers and the farmers who had lost their crops of paddy and cotton in districts of Narowal, Sialkot, Shaikhupura, Hafizabad, Mandibhuddin, Jhang,Okara, Shiwal , Pakpattan and other districrs.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo called upon the government to evolve a mechanism of conducting surveys of the density populated localities of major cities and undertake the repair of houses declared dangerous well in time.
He observed that if the amount spent on Metro Bus projects have been spent on the repair and construction of low cost housing the entire needs of the population of the province would have been met.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo said that the he would visit Gujranwala division from tomorrow and see the working of the local relief camps established by the local PPP leadership.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo thanked CO-Chairman Asef Ali Zardari and the Sindh government for donating Rs. 100 million for the rehabilitation of the flood victims of Punjab.
He said that he would also visit other districts that had been badly hit by the flash floods with a view to set up relief camps to provide immediate assistance to the victims.
He said that the PPP Punjab was launching Social Services Wing and its scope of activities would be enhanced to the fields of education and health also. He further said that the Workers Welfare Fund set up a few months ago would be integrated with the Social Services Wing with a view to make the services delivery more efficient.
Sectreayry General Tanvir Ashraf Kaira, Manzoor Maneka, Mian Abdul Waheed, Mian Muhammad Ayub,Dr. Khayyam, Raja Amir, Lubna Advocate were also present in the press conference.

پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے آج یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر پیپلز پارٹی موجودہ حکومت کی حمایت چھوڑ دے تو یہ ہفتوں میں نہیں بلکہ دنوں میں گر سکتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت عمران خان اور ڈاکٹر طاہرالقادری کو موجودہ سیاسی بحران ختم کرنے کے لیے ’’سیف پیسج‘‘ دے۔ حکومت اس ضمن میں دونوں رہنماؤں کو ایسی سہولتیں مہیا کرنے کی پوزیشن میں ہے۔ ایک سوال کے جواب میں میاں منظور احمد وٹو نے پیشینگوئی کی کہ حکومت نہیں گرے گی کیونکہ ملک کی تمام اہم اپوزیشن پارٹیاں جمہوریت، آئین اور قانون کی بالادستی پر مکمل یقین رکھتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت گرے گی تو صرف اپنی غلطیوں سے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ ملک میں ماورائے آئین سیاسی تبدیلی کوئی نہیں چاہتا ان زمینی حقائق کو ملکی اور غیر ملکی حالیہ سروے نے بھی ثابت کیا ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے پریس کانفرنس کے شروع میں کہا کہ پی ایم ایل (این) کی ماضی اور حال کی حکومتیں سیلاب کی تباہ کاریوں کی ذمہ دار ہیں کیونکہ یہ پنجاب میں پچھلے 30سال سے برسراقتدار ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی ایم ایل (این) کی حکومت کی نااہلی ناقابل معافی ہے کیونکہ انہوں نے فلڈ کمیشن کی 2010 ؁ء کی سفارشات کو عملی جامہ نہیں پہنایا ۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پنجاب کے وزیراعلیٰ لمبے جوتے پہن کر پانی میں کھڑے ہو کر فوٹو سیشن کے لیے مشہور ہو گئے ہیں وہ اس دوران بڑے بڑے دعوے کرتے ہیں لیکن اسکے فورًا بعد سب کچھ بھول جاتے ہیں اور کوئی آج تک دوررس حکمت عملی کو عملی جامہ نہیں پہنایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کے تمام شہروں کا سیوریج نظام وزیر اعلیٰ کا منہ چڑاتا ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے پارٹی قیادت اور اپنی طرف سے ان سوگوار خاندانوں سے دلی تعزیت کی جن کے عزیز اقارب سیلاب کی نظر ہو گئے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت عوام کو بھی اور خدا کو بھی اس مجرمانہ غفلت کے لیے جواب دہ ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے مطالبہ کیا کہ حکومت فورًا سیلاب زدگان ’’دیہی اور شہری‘‘ اور کسانوں کے لیے مالی پیکج کا فورًا اعلان کرے کیونکہ نارووال، سیالکوٹ، شیخوپورہ، حافظ آباد، منڈی بہاؤالدین، جھنگ، اوکاڑہ، پاکپتن، ساہیوال اور دوسرے اضلاع میں چاول اور کپاس کی فصلوں کو شدید نقصان پہنچا ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے حکومت پر زور دیا کہ وہ ایسا میکنزم بنائے جسکے تحت شہروں کے گنجان آباد علاقوں کے گھروں کا ہر سال سروے ہو اور ایسے گھر جنکو رہائش کے لیے خطرناک سمجھا جائے انکی بروقت مرمت کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ میٹرو پراجیکٹ پر جتنے صوبائی مالی وسائل خرچ ہوئے ہیں ان سے تمام صوبے کے حقدار لوگوں کی رہائشی ضرورتیں پوری ہو سکتی تھیں۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ وہ کل سے گجرانوالہ ڈویثرن کا دورہ کریں گے اور وہاں لوکل پیپلز پارٹی کے زیر اہتمام ریلیف کیمپ کی ورکنگ دیکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ دوسرے ضلعوں میں بھی ایسے ہی ریلیف کیمپ قائم کئے جا رہے ہیں۔ میاں منظور احمد وٹو نے کوچےئرمین آصف علی زرداری اور حکومت سندھ کا پنجاب کے سیلاب زدگان کی بحالی کے لیے ایک کروڑ کے عطیے کا شکریہ ادا کیا۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی پنجاب سوشل سروسز ونگ کا قیام عمل میں لا رہی ہے جسمیں ورکرز ویلفےئر فنڈز کو مدغم کر دیا جائے گا تاکہ حقداروں کو سہولیات کی فراہمی بہتر بنائی جا سکے۔ پریس کانفرس میں سیکرٹری جنرل تنویر اشرف کائرہ، منظور مانیکا، میاں عبدالوحید، میاں ایوب، ڈاکٹر خیام، راجہ عامر اور ایڈووکیٹ لبتیٰ چوہدری بھی موجود تھیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں