بلاول بھٹو اک تازہ ہوا کا جھونکا : تحریر علی اصغر اعوان

541cc7dff2666

وطن عزیز اس وقت اپنی بقاء کی جنگ لڑرہاہے ۔ایسی صورت حال میں ملک کے سیاستدان اس جنگ میں اپنا کردار ادا کرنے اور عوام کی خدمت کرنے کی بجائے ایشوز کو سیاسی رنگ دیتے ہوئے پوائنٹ سکورنگ کرنے میں مصروف عمل ہیں۔ جب جب اس پاک سرزمین کی عوام کو بھٹو خاندان کی ضرورت پیش آئی تب تب اس خاندان نے اپنی جان کی پروا کیے بغیر عوام کا ساتھ دیا ہے۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو نے طاقت کاسرچشمہ عوام کانعرہ لگاکر غریب عوام کو آواز دی اور انہیں سیاسی شعور دیا۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو کی اسی محنت کے نتیجہ میں سیاست کے ثمرات عام آدمی تک پہنچے اور طاقت کا سرچشمہ عوام کا نعرہ سچ ثابت ہوا ۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو کے بعد جہموریت کے چند دشمن سوچتے تھے کہ شہید بھٹو کی آواز ختم ہو گئی مگر ان کو اس بات کا اندازہ نہیں تھا کہ بھٹو کبھی مرتا نہیں ہے۔کم عمری میں محترمہ بے نظیر بھٹو نے عوام کے لیے جہدوجد شروع کی اور آخری دم تک عوام کا ساتھ نہ چھوڑا ۔ آج وہ ہی جذبہ چیئر مین بلاول بھٹو میں پایا جاتا ہے۔ بلاول بھٹو پاکستانی عوام کے لیے تازہ ہوا کے جھونکے کی مانند ہیں ۔ پیپلز پارٹی کے قیام کی بنیادی وجہ غریب عوام ان کے بنیادی حقوق دینا تھا اسی لیے بلاول بھٹو نے پنجاب کی سیاست کا آغاز سیلاب متاثرین اور عام عوام سے کیا ۔ اور لوگوں کے دلوں میں اپنے نانا ذوالفقار علی بھٹو کی مانند لوگوں میں گھل ملک گئے۔ ان کے اس مختصر دورے نے پنجاب کی عوام میں جوش اور جنون کی ایک نئی روح پھونک ڈالی ۔اس دورے میں عوام کی بلاول بھٹو سے محبت اس با ت کا ثبوت ہے کہ پنجاب کی عوام کو بلاول بھٹو اور بلاول بھٹو کو عوام سے الگ نہیں کیاجاسکتا۔ ملتان میں سیلاب متاثرین سے خطاب کے کشمیر کو واپس لینے کا بیان صرف ایک نعرہ ہی نہیں بلکہ پورے پاکستان کے دل کی آواز ہے ۔ اس سے قبل شہید ذوالفقار علی بھٹونے 1970ء میں کشمیری عوام کے لئے ہزاروں سال جنگ لڑنے کا عہد کیا تھااور کشمیری عوام کی آواز بنے شہید ذوالفقار علی بھٹو کے اس مشن کو بھی بی بی شہید نے جاری رکھا اور کشمیر کے ایشو کو عالمی سطحُ پر بلند کیا۔ آج بلاول بھٹو بھی اپنے نانا شہید ذوالفقار علی بھٹو اور اپنی والدہ شہید بی بی کی طرح کشمیری عوام کی آواز بن رہے ہیں ۔ یہ جذبہ بلاول بھٹو کو وراثت میں حاصل ہوا ہے۔ 18 کتوبر کاجلسہ عام آدمی کی زندگی پربہت اثر انداز ہوگااس جلسہ میں چیئر مین بلاول بھٹو پیپلزپارٹی کے اگلے لائے عمل کا اعلان کریں گئے۔ان کا یہ لائحہ عمل پارٹی کی مظبوطی کے لئے بہت اہمیت کا حامل ثابت ہو گا ۔ چیرمین بلاول بھٹو 18 اکتوبر کو مرسوں مرسوں پاکستان نہ ڈیسوں کا نعرہ لگاکر پوری پاکستانی عوام سے اظہار یکجہتی کریں گئے ۔ اس جلسہ کے بعد چیرمین بلاول ایک مرتبہ پھر پنجاب کی طرف رخ کرے گے۔وہ پنجاب میں ہر خاص اور عام سے ملاقات بھی کرئے گئے ۔ان کا اس بار پنجاب میں آناپارٹی کو محترک کرنے کے ساتھ ساتھ شہید ذوالفقار علی بھٹو اور اپنی شہید بی بی کے فلسفے اور ان کی سیاسی فکر کو دوبارہ اجاگر کے لئے بہت اہم ثابت ہوگا۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں