بھارتی حکومت نے اپنی لابی کے ذریعے بلاول بھٹو کو تقریر سے روکنے کی کوشش کی : پیپلز پارٹی

Picture

کراچی: پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنماؤں سابق وفاقی وزرا میر اعجاز جکھرانی، مولا بخش چانڈیو اور سردار رفیق احمد جمالی نے اپنے مشترکہ بیان میں کشمیریوں کی حمایت میں لندن میں ہونے والے ملین مارچ کو سبوتاژ کرنے کی سازش کی سخت مذمت کرتے ہوئے اسے انڈین لابی کا شاخسانہ قرار دیا ہے۔ پی پی پی میدیا سیل سندھ سے جاری کئے گئے اپنے بیان میں پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنماؤں نے کہا کہ جب سے پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کشمیری عوام کے حق خودارادیت کیلئے آواز بلند کی ہے۔ بھارتی انتہا پسند حکومت پریشان ہو گئی ہے وہ نہیں چاہتی کہ کشمیری عوام کے حق خود ارادیت اور ان پر ہونے والی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے خلاف کوئی توانا آواز اٹھے۔ اس لئے بھارتی حکومت نے ملین مارچ میں موجود اپنی لابی کے ذریعے بلاول بھٹو زرداری کو تقریر کرنے سے روکنے کی کوشش کی اور پیپلز پارٹی مخالف سیاسی قوتوں کو استعمال کیا۔ انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری نوجوان سیاستدان ہیں جنہوں نے انتہائی دلیری سے بھارت کو للکارا ہے اور ایک مرتبہ پھر مسئلہ کشمیر دنیا بھر میں اجاگر ہورہا ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماؤں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ ایسے عناصر کو پہچانیں جو نہ صرف ملک میں دہشت گردی، شدت پسندی، انتہا پسندی کے خلاف بات نہیں کرتے بلکہ دہشت گردوں کے خلاف فوجی کارروائی کے بھی خلاف ہیں اور اب اپنے مذموم سیاسی مقاصد کی تکمیل کی خاطر کشمیر کے مسئلہ کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں