آئندہ انتخابات میں پنجاب میں کامیابی پیپلزپارٹی کا مقدر ہے ۔ منظور وٹو

شریف برادران کو آئندہ انتخابات میں آٹے دال کا بھاؤ معلوم ہو جائے گا ، پنجاب کے عوام سریا برادران کے جھانسے میں آنے والے نہیں، پنجاب حکومت کی ساری توجہ لاہور پر مرکوز ہے ، باقی صوبے میں کسی کو کوئی پوچھنے والا نہیں

ق لیگ کے ساتھ تمام معاملات طے کر لئے ،اتحاد برقرار رہےگا ،کارکنوں کو ساتھ لیکر چلوں گا عوام سریا برادران کے جھانسے میں آنے والے نہیں:پریس کانفرنس ، کارکنوں سے گفتگو
اسلام آباد /لاہور/ساہیوال (ثناءنیوز،آئی این پی) وفاقی وزیر امور کشمیر وگلگت’ بلتستان اور پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے صدر منظور احمد ووٹو نے آئندہ عام انتخابات میں پنجاب کو میدان جنگ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پورے ملک کی62فیصد آبادی پنجاب میں ہے پنجاب نے فیصلہ کرنا ہے کہ اقتدار کا تاج کس کے سر پر سجے گا؟، پیپلز پارٹی نے صوبے میں مسلم لیگ(ق) سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ سمیت تمام معاملات طے کرلئے ، ہمارا اتحاد برقرار رہے گا،پنجاب کی تمام تحصیلوں ڈویژنوں اور یونین کونسلوں میں پیپلز پارٹی کے تنظیمی ڈھانچے کو مضبوط بنایا جائے گا، پارٹی کیلئے قربانیاں دینے والے جیل جانے والوں کو ساتھ لیکر چلوں گا اور خاموش ساتھیوں کے پاس خود جاؤں گا ۔وہ پنجاب ہاؤس میں ضلع راولپنڈی کے نمائندوں سے مشاورتی اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کررہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے نام ورکرز کو اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کرنے کی کوشش کرنا ہو گی ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی آئندہ عام انتخابات میں(ق) لیگ کے ساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کریگی اور آئندہ دو یا چار روز میں مسلم لیگ(ق) کے سربراہ کے ساتھ مل کر تمام معاملات کو حتمی شکل دیدی جائے گی۔ ساہیوال اور لاہور سے تعلق رکھنے والے پارٹی کارکنوں کے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے منظور وٹو نے کہا کہ شریف برادران کو آئندہ انتخابات میں آٹے دال کا بھاؤ معلوم ہو جائے گا ، پنجاب کے عوام سریا برادران کے جھانسے میں آنے والے نہیں، پنجاب حکومت کی ساری توجہ لاہور پر مرکوز ہے ، باقی صوبے میں کسی کو کوئی پوچھنے والا نہیں ، آئندہ انتخابات میں پنجاب میں کامیابی پیپلزپارٹی کا مقدر ہے ۔ منظور وٹو نے کہاکہ فوجی آمر کی پیداوار (ن)لیگ آج بھی ضیاءالحق کے دور کے خواب دیکھ رہی ہے لیکن اب اس ملک میں نہ تو کوئی ضیاءالحق آئے گا اور نہ ہی (ن)لیگ کو چور دروازے سے اقتدار میں آنے کا موقع ملے گا ۔

Source: Roznama Dunya

اپنا تبصرہ بھیجیں