شہباز شریف نے پیپلز پارٹی کے خوف سے اپنے دروازے اراکین اسمبلی کے لئے کھول دیے ہیں : میاں منظور احمد وٹو

پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے کہا ہے کہ میاں شہباز شریف نے پیپلز پارٹی کے خوف سے اپنے دروازے اراکین اسمبلی کے لئے کھول دیے ہیں اور وہ ارکان جن سے ملنا بھی پسند نہیں تھا اب شرف ملاقات بخشا جا رہا ہے۔ گذشتہ روز دیپالپور میں اپنی رہائش گاہ پر پنجاب بھر سے آنے والے وفود سے ملاقاتوں میں اظہار خیال کرتے ہوئے منظور وٹو نے کہا کہ آج ساڑھے چار سال بعد ارکان اسمبلی کی سنی گئی ہے۔ ارکان اسمبلی سے ملاقاتوں کے وزیراعلیٰ پنجاب کے اعلان سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ کس کی وجہ سے دروازے کھولے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ارکان اسمبلی سے کہتا ہوں کہ ہمیں دعائیں دیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم مسلم لیگ (ن) کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔ یہ مقابلہ سیاسی طور پر کیا جائے گا۔ شہباز شریف کو ارکان اسمبلی کی عزت پر مجبور کرنا ہماری کامیابی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی پی پی اپنے اتحادیوں کے ساتھ مل کر انتخابات میں حصہ لے گی اور مرکز اور صوبوں میں کامیابی حاصل کریں گے۔ دریں اثناءنجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے منظور وٹو نے کہا کہ اصغر خان کیس کے فیصلے کے بعد شریف برادران عوام سے معافی مانگیں، پیپلز پارٹی کو جتوانے کے لئے تمام توانائیاں صرف کر دوں گا، اصغر خان کیس کے فیصلے میں ثابت ہو گیا ہے کہ مسلم لیگ کے لوگوں نے اسٹیبلشمنٹ سے پیسے لے کر آئی جے آئی بنائی اور الیکشن میں پیپلز پارٹی کو ہرانے کے لئے یہ جماعت بنائی۔ میاں منظور وٹو اور چودھری پرویز الٰہی مل کر شہباز شریف کو پنجاب میں شکست دیں گے۔ ق لیگ کے بندے نہیں توڑوں گا۔ جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کے لئے پیپلز پارٹی سنجیدہ ہے۔ وزیراعلیٰ کون ہو گا اس کا فیصلہ صدر زرداری کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں