تخت لاہور نے بلدیاتی انتخابات چھ ماہ کے لۓ موخر کرکے غیرجمہوری ذہنیت کا ثبوت دیا ہے: راجہ عامر خان

پاکستان پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے سکریٹری اطلاعات راجہ عامر خان نے کہا ہے کہ پنجاب کے حکمرانوں نے بلدیاتی انتخابات موخر کرکے غیرجمہوری طرز عمل اختیار کیا ہے۔
پنجاب حکومت نے ایک بار پھر مقامی انتخابات کے فوری انعقاد کی بجائے پنجاب اسمبلی سے چھ ماہ کی تاخیر کا توسیعی بل منظور کرکے ثابت کیا ہے کہ وہ وفاقیت، جمہوریت اور انتقال اقتار کے سیاسی اصولوں کے خلاف ہے۔

مسلم لیگ ن کی پنجاب میں حکومت مسلسل تاخیری حربے استعمال کرکے مقامی اداروں کے انتخابات سے بھاگ رہی ہے ۔ مسلم لیگ ن کی قیادت نے میثاق جمہوریت میں عہد کیا تھا کہ وہ مستقبل میں مقامی حکومتوں کے نظام کے بارے میں ماضی کے غیر جمہوری طرز عمل سے گریز کریں گے ۔ لیکن اب وہ اپنے وعدوں سے مکرچکی ہے پنجاب کی حکمران جماعت کا یہ رویہ ان مقامی اداروں کے بارے میں استحصال پر مبنی ہے ۔ پنجاب میں مسلم لیگ ن کی حکومت کے اس طرز عمل کی وجہ سے صوبہ میں طرز حکمرانی کا بحران شدید ترین ہوگیا ہے ۔ مقامی اداروں کے نہ ہونے کی وجہ سے مقامی قیادت کے مقاصد میں وسائل پر عملاً بیورو کریسی کی اجارہ داری ہے اور اس اجارہ داری کی وجہ سے مقامی مسائل حل ہونے کے بجائے اور زیادہ سنگین ہوتے جارہے ہیں۔انتظامی سیاسی اور مالیاتی اختیارات نچلی سطح پر منتقل نہ ہونے کی وجہ سے پسماندگی بڑھ رہی ہے اور عوام میں بےچینی اور محرومی کا احساس شدت اختیارات کرتا جارہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں