Confrontational politics not in the interest of the country: Mian Manzoor Wattoo

1459815_472021389602288_7981576190487161283_n
Mian Manzoor Ahmed Wattoo, President Punjab PPP, while talking to a delegation of PPP district Narowal here today urged the government to accept the demand of PTI Chief regarding the investigation of alleged election rigging through the Supreme Court Judicial Commission.
In the delegation, former Federal Minister and PPP Vice President Mr. Tariq Anees were also included along with other office bearers of the district.
He also called upon the PTI Chief to drop his demand of associating the representatives of the MI and ISI in the Commission. The Supreme Court judges will not like their presence in the Commission leading to unpleasant situation between the two institutions, he observed.
He pointed out that the politics of confrontation had led to paralyzing the country which was not in the interest of nation and the country by many measure.
He added that the type of politics had made the country as a laughing stock in the international community and it was the time to exhibit maturity in resolving the issues with consensus and understanding. Politics of juggernaut is against the democratic ethos, he said.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo assured the office bearers of Narowal that the top position of the Party would be filled within next couple of days.
He urged them to work very hard in the district for the Party assuring his full support. He expressed his hope that the workers and office bearers who had reservation about the leadership would come to the fold once Chairman Bilawal Bhutto would send for them.
He said that the PPP was the biggest Party of the country and its genesis would not allow any compromise on federation and democracy come what may.

میاں منظور احمد وٹو صدر پنجاب پیپلز پارٹی نے کہا ہے کہ حکومت کو پاکستان تحریک انصاف کے سپریم کورٹ کے جوڈیشل کمیشن کے ذریعے مبینہ انتخابی دھاندلیوں کی تحقیقات کے مطالبے کو فورًا تسلیم کر لینا چاہیے ۔ یہ بات انہوں نے آج یہاں پیپلز پارٹی ضلع نارووال کے ایک وفد سے باتیں کرتے ہوئے کہی ،انکے ہمراہ وائس پریذیڈنٹ پیپلز پارٹی اور سابق وفاقی وزیر چوہدری طارق انیس بھی تھے۔انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان کو بھی جوڈیشل کمیشن کے ساتھ ایم آئی اور آئی ایس آئی کے نمائندوں کی شمولیت کے مطالبے کو چھوڑ دینا چاہیے کیونکہ سپریم کورٹ کے ججز اسطرح کی شمولیت کو پسند نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک و قوم اس محاذ آرائی کی پالیسی کی وجہ سے شدید نقصان کا باعث بنی ہے، اس لیے دونوں پارٹیوں کو ملک اور قوم کا احساس کرتے ہوئے ایکدوسرے کے مطالبے تسلیم کرتے ہوئے ملک کو اس عذاب سے جلد از جلد نجات دلانی چاہیے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس طرز سیاست کی وجہ سے ملک کی دنیا میں بڑی جگ ہنسائی ہوئی ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے پیپلز پارٹی کے ضلع نارووال کے پارٹی عہدیداران سے کہا کہ وہ اپنے ضلع میں پارٹی کو فعال بنانے کے لیے شب و روز محنت کریں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ضلع نارووال کی پارٹی کے ضلعی صدر کی تعیناتی آئندہ چند ورز میں کر دی جائے گی۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی ملک کی سب سے بڑی جماعت ہے اور چےئرمین بلاول بھٹو کی قیادت میں پارٹی ایک دفعہ پھر پاکستان کے سیاسی افق پر ابھرے گی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پارٹی کے ناراض کارکن اور عہدیدار چےئرمین بلاول بھٹو کی آواز پر بغیر کسی ہچکچاہٹ کے پارٹی میں جوق در جوق واپس آئیں گے۔ وفد میں مسعود بسرا ایڈووکیٹ، میاں فیاض، حسنین شاہ، خواجہ اظہر، حافظ محمد عمران بھٹی، حاجی امین اختر وغیرہ شامل تھے۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں