Present government totally discredited: Mian Manzoor Ahmed wattoo‏

DSC_0981
There is no chance of undemocratic set up in the country,and the PPP has played a decisive role in salvaging democracy, said Mian Manzoor Ahmed Wattoo while talking to PPP office bearers here today.
He said that constitutional institutions like judiciary, Parliament, Senate were working and these institutions enjoyed wider support and recognition of the people.
He said that the PPP was the anti-establishment Party while others were pro-establishment Parties adding PPP believed in the politics of the people.
He said that the PPP totally relied on the people of Pakistan while other parties had sought the crutches of establishment to ascend to the corridors of power.
He said that the PPP was not supporting the government; it was supporting democracy in unison with the vision of the founder of the nation and of the PPP. Salvation and bright future of the country hinges on the continuity of the democracy in the country, he maintained.
He observed that the present government had been totally discredited by the people because it had failed to deliver which was evident from the excessive load shedding of electricity and gas, worsening law and order situation, higher rate of inflation including the worsening law and order situation.
He rejected their style of doing politics adding that his own MNAs and MPAs were fed up with their rather rude attitude towards them and Zulfiqar Khosa though denied his involvement in the forward block formation but he was in touch with all of them.
He told them that he did not foresee the holding of mid term elections in the country because neither the Prime Minister would resign nor there was any possibility of disqualification of the Prime Minister by the Court. The emergence of these two scenarios are most unlikely, he predicted.
He demanded that the government should immediately undertake necessary initiatives for the constitution of Judicial Commission of the Supreme Court for investigation of the rigging allegations. It should not miss this opportunity to diffuse the situation, he suggested.
He disapproved the action of the government regarding issuing arrest warrants of Dr. Qadari and Imran Khan adding it was apolitical move and therefore would spoil the comparatively enabling political environment in the country.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo expressed his outrage over the killing of two IDPs by the KPK police. The incident blow in the face of the claim of KPK government of better police.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo also rejected the display of arms of PTI workers in Gujranwala today describing it as poor reflection on the Party and its leadership.

پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے آج یہاں پارٹی عہدیداروں سے باتیں کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں غیر جمہوری سیٹ اپ کا کوئی چانس نہیں ہے اور جمہوریت کو بچانے کے لیے پیپلز پارٹی نے فیصلہ کن کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں تمام آئینی ادارے کام کر رہے ہیں، پارلیمنٹ، عدلیہ اور سینیٹ کو عوام میں بڑی مقبولیت حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی اینٹی اسٹیبلشمنٹ پارٹی ہے جبکہ دوسری سیاسی جماعتیں پرو اسٹیبلشمنٹ ہیں۔ پیپلز پارٹی عوامی طاقت پر بھروسہ کرتی ہے جبکہ دوسری پارٹی اسٹیبلشمنٹ کی بیساکھیوں سے ایوان اقدار میں آتی رہی ہیں۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی حکومت کی حمایت نہیں کر رہی بلکہ جمہوریت کی حمایت اس لیے کر رہی ہے کیونکہ جمہوریت بانی پاکستان اور بانی پیپلز پارٹی کی سوچ سے مکمل مطابقت رکھتی ہے اور اسی میں پاکستان کی بقاء اور خوشحالی پنہاں ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ موجودہ حکومت مکمل طور پر ڈس کریڈٹ ہو چکی ہے کیونکہ یہ عوام کو ریلیف دینے کی بجائے تکلیف کی باعث بنی ہے۔ مہنگائی، بیروزگاری، بگڑتی ہوئی امن عامہ کی صورتحال اور سب سے بڑھ کر بجلی اور گیس کی لوڈشیڈنگ نے لوگوں کا جینا حرام کیا ہوا ہے اور بہتری کی تمام امیدیں بھی دم توڑ چکی ہیں۔ میاں منظور احمد وٹو نے شریف برادران کے سیاست کرنے کے طرز کو مسترد کیا اور کہا کہ اس طرز عمل سے ایم این اے اور صوبائی اسمبلیوں کے ممبران میں بڑی رنجش پائی جاتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگرچہ ذوالفقار علی کھوسہ فارورڈ بلاک کی تردید کرتے ہیں لیکن وہ تمام ناراض اراکین سے رابطے میں ہیں۔ میاں منظور احمد وٹو نے انہیں بتایا کہ وہ ملک میں مڈٹرم انتخابات نہیں دیکھ رہے جو کہ صرف دو صورتوں میں ہو سکتے ہیں، یا تو وزیراعظم استعفیٰ دیں یا عدلیہ انکو نا اہل قرار دے دے لیکن ایسا ہوتا نظر نہیں آرہا ۔ میاں منظور احمد وٹو نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ عمران خان کے جوڈیشل کمیشن کے مطالبے کو فورًا تسلیم کر لے تا کہ ملک کو موجودہ عذاب سے نجات حاصل ہو۔ میاں منظور احمد وٹو نے ڈاکٹر طاہرالقادری اور عمران خان کے وارنٹ گرفتاری جاری ہونے پر غصے کا اظہا ر کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک غیر سیاسی اور اور غیر داانشمندانہ اقدام ہے جسکو فی الفور واپس لینا چاہیے۔ میاں منظور احمد وٹو نے خیبر پختونخواہ کی پولیس کے ہاتھوں آج دو متاثرین کی ہلاکت کی مذمت کی اور کہا کہ یہ واقعہ خیبرپختونخواہ کی حکومت کی اچھی پولیس کے منہ پر طمانچہ ہے۔ انہوں نے پاکستان تحریک انصاف کے کارکنوں کی آج گجرانوالہ میں اسلحہ کی نمائش کو غیر ذمہ دارانہ اور مجرمانہ فعل قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایسی حرکات سے پارٹی کے امیج کو نقصان ہو گا۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں