وفاق کی وارننگ کے باجود پنجاب حکومت کی طرف سے مجالس اور محرم کے جلوسوں کے لئے فول پروف حفاظتی انتظامات نہ کئے گئے جس پر دہشت گرد راولپنڈی میں اپنے مذموم مقاصد کے حصول میں کامیاب ہوگئے

محرم کے آغاز پر وفاق نے تمام صوبوں کو دہشت گردی کے خطرات سے آگاہ کیا تھا‘ اب بھی انتظامات نہیں کئے جا رہے: رپورٹ وفاقی حکومت نے محرم الحرام کے آغاز میں ہی تمام صوبائی حکومتوں کو خبر دار کیا تھا کہ محرم کے جلوسوں اور مجالس میں دہشت گردی کے خطرات ہیں۔ وفاقی حکومت نے تمام صوبوں کو ہدایات دی تھیں کہ وہ محرم کے دوران امن و امان کے خصوصی انتظامات کریں۔

لاہور( دنیا نیوز رپورٹ) پنجاب حکومت کو بھی محکمہ داخلہ کی طرف سے مراسلہ بھیجا گیا تھا جس میں راولپنڈی کو حساس قرار دے کر یہاں خصوصی انتظامات کرنے کے لئے کہا گیا تھا۔ مسلم لیگ ن نے وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک کی طرف سے تجویز کئے گئے اقدامات کا تمسخر اڑایا اور انہیں غیر ضروری قرار دیا گیا۔ قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چودھری نثار نے موبائل فون سروس اور موٹر سائیکل چلانے پر پابندی کی رحمان ملک کی تجویز پر کڑی نکتہ چینی کی تھی۔ پنجاب حکومت کی طرف سے مجالس اور محرم کے جلوسوں کے لئے فول پروف حفاظتی انتظامات نہ کئے گئے جس پر دہشت گرد راولپنڈی میں اپنے مذموم مقاصد کے حصول میں کامیاب ہوگئے ۔ صوبائی حکومت کی طرف سے پنجاب پولیس کی اس نا اہلی پر کوئی کارروائی نہیں کی گئی اور نہ ہی صوبے کی کسی شخصیت نے اس سلسلے میں ذمے داری قبول کرتے ہوئے اپنے منصب سے استعفے دیا۔ راولپنڈی میں ہونے والے دہشت گردی کے واقعہ کے باوجود لاہور سمیت کسی بھی بڑے شہر میں حفاظتی انتظامات نہیں کئے گئے اور نہ ہی

سیکورٹی ڈیوٹی پر تعینات پولیس فورس کی تعداد میں اضافہ کیا گیا۔

Source: Roznama Dunya

اپنا تبصرہ بھیجیں