PMLN Govt keeps repeating the same mistakes: Mian Manzoor Wattoo

DSC_0539

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو سے آج حافظ آباد کے ایک وفد نے عنصر عباس بھٹی اور ملک وزیر اعوان کی قیادت میں ان سے یہاں ملاقات کی ۔ میاں منظور احمد وٹو نے وفد سے باتیں کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی ملکی سیاست میں فوج کی مداخلت کے حق میں نہیں ہے اور نہ ہی دھرنوں کی سیاست سے حکومت کی تبدیلی چاہتی ہے۔ پیپلزپارٹی ایک سنجیدہ جماعت ہونے کے ناطے جمہوریت کے استحکام اور تسلسل پر ایمان کی حد تک یقین رکھتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ انتخابی دھاندلی کے باوجود پیپلز پارٹی نے ایجی ٹیشن میں حصہ نہ لے کر یہ ثابت کر دیا کہ یہ جماعت اور اسکی قیادت دوراندیش ہے جو کسی قیمت پر بھی قومی وقار کو داؤ پر لگانے کے حق میں نہیں ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ مسلح افواج اس وقت بڑا اہم قومی فریضہ انجام دے رہی ہے اور دہشتگردی کے خلاف بے مثال قربانیاں دے رہی ہے اور پوری قوم انکو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی واحدجماعت ہے جو سب سے زیادہ دہشتگردی کے خلاف ہے جسکے نوجوان لیڈر بلاول بھٹو نے موجودہ ضرب عضب شروع ہونے سے بہت پہلے کہا تھا کہ دہشتگرد نہ پاکستانی ہیں اور نہ مسلمان، اور انکے خلاف آخری دہشتگرد ختم ہونے تک جنگ جاری رکھنا ہوگی۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی اسی لیے اپنی مسلح افواج کے پیچھے کھڑی ہے اور انکی کامیابی کے لیے دعاگو ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ 30 نومبر کا پاکستان تحریک انصاف کا جلسہ حکومت کی نا عاقبت اندیشی کا نتیجہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ صرف 4 حلقوں کو کھولنے کا معاملہ تھا لیکن حکم امتناعی کی دوڑ کیوجہ سے یہ معاملہ اب موجودہ نہج پر پہنچ گیا ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ جہاں تک انکو یاد ہے کہ عمران خان کی ریلی اور دھرنا مکمل طور پر پرامن رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو عمران خان کو فری ہینڈ دینا چاہیے اور کسی قسم کی مداخلت اور تشدد نہیں کرنا چاہیے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر ماڈل ٹاؤن کے واقعہ کی تاریخ دوہرائی گئی تو یہ بہت برا ہو گا۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ موجودہ حکومت مکمل طور پر ڈس کریڈٹ ہو چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2014 کا دور 85کے دور سے مختلف ہے لیکن ہمارے موجودہ حکمران کو اسکا کوئی احساس نہیں ہے اور وہ ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھنے کی بجائے وہی غلطیاں دہرا رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ انہوں نے الیکشن سے پہلے قوم کو سبز باغ دکھائے لیکن ڈیڑھ سال گزرنے کے باوجود لوڈشیڈنگ، مہنگائی، امن عامہ، روزگار کی فراہمی کے مسائل اور زیادہ گھمبیر ہو گئے ہیں۔ عنصر عباس بھٹی اور ملک وزیر اعوان نے اس موقع پر صدر پیپلز پارٹی پنجاب کو بتایا کہ حافظ آباد سے پارٹی کارکن اور عہدیدار چےئرمین بلاول بھٹو اور کوچےئرمین آصف علی زرداری سے یوم تاسیس کے موقع پر ملنے کے لیے بڑی بے تابی سے انتظار کر ہے ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ پارٹی کے کارکنوں میں بڑا جذبہ ہے اور وہ پارٹی کو فعال بنانے کے لیے پر عزم ہیں۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں