پیپلز پارٹی بھی دھرنوں میں شامل ہو جاتی تو تیسری قوت آ جاتی -میاں منظور احمد وٹو

10801699_477245105746583_2848801802379620874_n

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے آج یوم تاسیس کی تقریب کے سلسلے میں خطاب کر تے ہوئے کہا کہ اگر پیپلز پارٹی بھی دھرنوں میں شامل ہو جاتی تو پھر ملک میں آٹھ سے دس سال کے لے تیسری قوت آ جاتی۔ انہوں نے کہا کہ یہ کوچیئرمین آصف علی زرداری کی دوراندیشی ہے کہ انہوں نے جمہوریت کے تسلسل کی خاطر دھرنوں کی سیاست نہ کرنے کا فیصلہ کیا اور آج جمہوریت پاکستان میں قائم و دائم ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ سابق صدر آصف علی زرداری نے از خود اپنے اختیارات پارلیمنٹ کو دے کر جمہوریت کو مضبوط کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی نے 125 ممبروں کے ساتھ پانچ سال پورے کئے لیکن موجودہ حکومت کے پاس اسمبلی میں دو تہائی اکثریت ہونے کے باوجود ایک سال پورا کرنا انکو مشکل ہو رہا ہے اور عام تاثر یہ ہے کہ حکومت آج گئی اور کل گئی۔ میاں منظور احمد وٹو نے دیوان غلام محی الدین کو پیپلز پارٹی کی طرف سے اور اپنی طرف سے یوم تاسیس کے سلسلے میں اتنی شاندار تقریب کا اہتمام کرنے پر انکو مبارکباد دی۔ تقریب میں آزاد کشمیر کے وزیراعظم چوہدری عبدالمجید اور لاہور سے بہت بڑی تعداد میں پیپلز پارٹی کے عہدیداروں اور کارکنوں نے شرکت کی ۔ میاں منظور احمد وٹو نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ لاہور کے اس حلقے سے آزاد کشمیر کی سیٹ کے لیے انتخابات کرائے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت یہاں پر اس لیے انتخابات نہیں کروا رہی کیونکہ انکو شکست کا خطرہ ہے۔اس سے پہلے چوہدری منظور، ثمینہ خالد گھرکی اور فائزہ ملک (ایم پی اے) نے خطاب کیا۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں