Mian Manzoor Wattoo urges Opposition Leader to raise the subject regarding formation of Provincial Finance Commission Award in Punjab

Picture
Mian Manzoor Ahmed Wattoo has urged the Opposition Leader Syed Khurshid Shah to take up the setting up of the Provincial Finance Award Commission in Punjab urgently at the floor of the Parliament to stop the monkey business in the disbursement of development funds of the province among the districts by the Chief Minister of Punjab. He said this in a sppeech at a dinner that he hosted in honor of Opposition Leader Syed Khurshid Shah last night at Gym khana Club here yesterday.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo said that the discriminatory distribution of development funds by the Chief Minister Punjab had left the least developed districts and regions of the Punjab high and dry causing acute economic deprivation among the people living there.
He said that the Punjab government had been engaged in the distribution of the resources of the province of Punjab as their personal property hence could not be justified by any measure of economic and social justice.
He pointed out that the development of big cities at the cost of the far flung districts and the backward regions of the province were fueling hatred against the major urban centers which would not bode well in the process of growth of an homogeneous population in the rovince.
He underscored the importance of taking the issue of Provincial Finance Commission Award with full seriousness because of its definite positive impact on the federation and the country. Its absence will create not only tension between the urban and rural population of the province but also it could trigger mass migration to major cities with inherent difficulties attached to such scenario causing unbearable burden on cities’ infrastructure.
He pointed out that due to the unfair distribution of the financial resources, roads had disappeared especially of the farm to market, sanitation system was good for nothing, education and health institutions were in deplorable conditions and lack of clean drinking water had caused hepatitis to an epidemic proportion.
Those who attended the dinner were the prominent PPP leaders those included Syed Mehdi Shah, Sardar Latif Khosa, Naveed Qarrich, Mr. Nisar Khuro, Khanzada Khan, Qasim Zia, Zamurd Khan, Akhoonzada Chattan, Moazzam Wattoo, Fazal Karaim Kundhi, Senator Aitezaz Ehsan, Qamar Zaman Kaira, Tanvir Ashraf Kaira, Pir Mazhar-ul-Haq, Noor Alam, Akram Chaudhry, Naveed Chaudhry, Tasneem Qureshi, Nawab Sheer Vaseer, Chaudhry Manzoor, Ejaz Ahmed Samma, Imtiaz Safdar Warrich, Dewan Mohyuddin, Aziz-ur-Rehman Chan, Nadeem Afzal Chann, Faisal Karim Kundhi, Mr. Khurram Jehangir Wattoo, MPA, Mian Misba-ur-Rehman and Raja Amir.
Later, Misbah-ur-Rehman presented beautiful bouquets to Mian Manzoor Ahmed Wattoo, Syed Kurshid Shah, Syed Medi Shah, Pir Mazarhar-ul-Haq and Nisar Khuro and appreciated their kind presence in the Club.

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ پر زور دیا ہے کہ وہ پارلیمنٹ میں صوبائی فنانس کمیشن ایوارڈکی صوبہ پنجاب میں تشکیل کا مسئلہ اٹھائیں کیونکہ اس وقت صوبائی مالی وسائل کی بندر بانٹ وزیر اعلیٰ پنجاب کی زیر قیادت جاری ہے۔یہ بات انہوں نے گزشتہ روز جم خانہ کلب میں اپوزیشن لیڈر کے اعزاز میں عشائیہ کے بعد تقریر کرتے ہوئے کہی۔میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ مالی وسائل کی تقسیم حکومت پنجاب ایسے کر رہی ہے جیسے یہ انکی ذاتی ملکیت ہو۔ انہوں نے کہا کہ دور دراز کے اضلاع اور علاقے اس غیر منصفانہ ترقیاتی فنڈز کی تقسیم کی وجہ سے پسماندگی کا شکار ہیں اور وہاں کے رہنے والے لوگ معاشی محرومی میں مبتلا ہیں۔انہوں نے کہا کہ چند بڑے منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے کے لیے پسماندہ علاقوں کی ترقی کو پس پشت ڈالنا کسی لحاظ سے بھی جائز نہیں ہے اور یہ حکمت عملی سماجی اور معاشی انصاف کے تقاضوں کے صریحاً برعکس ہے۔میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ ان علاقوں کی معاشی محرومی شہری علاقوں میں رہنے والے لوگوں کے خلاف نفرت کو جنم دیگی جسکی وجہ سے صوبے کی عوام کے درمیان نفرتیں پھیلیں گی جو کہ صوبے اور ملک کے مفاد میں نہیں۔ انہوں نے اپنی تقریر میں پھر کہا کہ اپوزیشن لیڈر کو اس مسئلے کو بڑی سنجیدگی سے لیتے ہوئے پارلیمانی فورم استعمال کرنا چاہیے کیونکہ صوبائی فنانس کمیشن ایوارڈ کی تقسیم سے صوبائی مالی وسائل کی منصفانہ تقسیم تمام اضلاع کے درمیان یقینی ہوگی جس سے وفاق پر بڑے دوررس نتائج مرتب ہوں گے۔ انہوں نے متنبہ کیا کہ اگر اس طرف قدم نہ اٹھایا گیا تو کم پسماندہ علاقوں سے بڑے شہروں کی طرف بڑی آبادی کی منتقلی ہونا شروع ہو جائے گی جس سے ان شہروں کا انفراسٹرکچر اس کا متحمل نہیں ہوسکے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس غیر منصفانہ تقسیم میں صوبے کے دوسرے علاقوں میں سڑکوں کی حالت قابل رحم ہے اور خاص کر فارم ٹو مارکیٹ تو سڑکیں بالکل غائب ہیں۔ شعبہ تعلیم اور صحت کی حالت بھی دیگرگوں ہے، سیوریج کا نظام مفلوج ہے اور صاف پانی کی عدم دستیابی کی وجہ سے ہیپاٹائٹس کی بیماری وباء کی طرح پھیل رہی ہے۔ جن معزز قائدین نے اس عشائیے میں شرکت کی ، ان میں سید مہدی شاہ،سردار لطیف کھوسہ، نوید قمر، نثار کھوڑو، خانزادہ خان، قاسم ضیاء زمرد خان، اخنزادہ چٹان، معظم وٹو، فضل کریم کندی، سینیٹر اعتزاز احسن، قمر زمان کائرہ، تنویر اشرف کائرہ، پیر فضل حق، نور عالم، اکرم چوہدری، نوید چوہدری، تسنیم قریشی، نواب شیر وسیر، چوہدری منظور، اعجاز احمد سماء،امتیاز صفدر وڑائچ، دیوان محی الدین، عزیزالرحمن چن، ندیم افضل چن، خرم جہانگیر وٹو، ایم پی اے، مصباح الرحمن،راجہ عامر اور اکرم شہیدی نے شرکت کی۔ عشائیے کے بعد مصباح الرحمن نے کلب کی طرف سے میاں منظور احمد وٹو، سید خورشید شاہ، سید مہدی شاہ، پیر مظہر الحق اور نثار کھوڑو کو خوبصورت پھولوں کے گلدستے پیش کئے اور کہا کہ انکی یہاں تشریف آوری سے ہماری عزت افزائی ہوئی ہے۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں