ن لیگ پولیس کے ذریعے جیتی ، انتخابی نتائج قبول نہیں:منظور احمد وٹو

manzoor-watto_lpic-2410

پہلے انتخابات عدلیہ کی زیرنگرانی ہوتے تھے ، یہ پنجاب حکومت کے آفیسرز کی نگرانی میں ہوئے سپریم کورٹ پنجاب کے ضمنی انتخابات میں دھاندلی کا ازخود نوٹس لے :پریس کانفرنس
پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے صدر منظور احمد وٹو نے کہا ہے (ن) لیگ نے اپنی ہی چھوڑی ہوئی نشستوں پر ضمنی انتخاب میں حکومتی مشینری کی مدد سے کامیابیاں حاصل کر کے کوئی کارنامہ سرانجام نہیں دیا، نتیجہ بوگس ہے قبول نہیں کرتے ۔ گزشتہ روز پریس کانفرنس کرتے ہوئے منظوراحمد وٹو نے بتایا پنجاب حکومت نے ضمنی انتخابات میں جوڈیشل افسران کی بجائے مختلف سرکاری افسران و پٹواریوں کی مدد سے انتخاب کرواکر اپنے لیے ہی مسائل پیدا کیے ہیں۔پہلے انتخابات عدلیہ کی نگرانی میں ہوتے تھے یہ ضمنی انتخابات پنجاب حکومت کے آفیسرز کی نگرانی میں ہوئے جنہوں نے ریٹرنگ آفیسر کے فرائض سرانجام دیئے ۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ضمنی انتخاب جن میں عوام کی کوئی خاص سروکار نہیں ہوتا حیران کن طور پر ٹرن آؤٹ بہت زیادہ رہا گجرات میں آخری دو گھنٹے میں ٹرن آؤٹ بڑھ کر پینتالیس فیصد ہوگیا۔بیلٹ پیپر چوری ہوئے پولیس گردی کے ذریعے بھی دھاندلی کی گئی ،ن لیگ پنجاب پولیس کے ذریعے جیتی، سپریم کورٹ انتخابات میں دھاندلی کا ازخود نوٹس لے ۔ منظور وٹو کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت جمہوری رویوں کو پروان چڑھا رہی ہے ، ہم نے سپریم کورٹ کے حکم کے باوجود اصغر خان کیس میں نواز شریف کے خلاف ایف آئی اے کے ذریعے تحقیقات سے معذرت کرلی ۔ انہوں نے مزید کہا ہمیں الیکشن کمیشن پر مکمل اعتماد ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں