آمروں کی باقیات کو ایوان صدرمیں سیاستدان اچھا نہیں لگتا , قمر زمان کائرہ

23887_92728354

عدالتوں کا ہمیشہ احترام کیا، پتہ نہیں ہماری حکومت ہی کیوں گرائی جاتی ہے ،مشرف کوتصادم سے ہٹاتے تو جمہوریت طاقتورنہ ہوتی نواز لیگ نے دھوکے سے ضمنی الیکشن جیتا ،ہم جا بھی رہے ہیں اور آبھی رہے ہیں‘ الیکشن کے بعد حکومت بنائینگے :بینظیر کی یاد میں سیمینار سے خطاب
کراچی(سٹاف رپورٹر‘مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات قمر الزمان کائرہ نے کہا ہے کہ شہید بے نظیر بھٹو نے نفرت کی سیاست کو ختم کر کے مفاہمت کی پالیسی کو فروغ دیا۔ انہوں نے سب کچھ بھلا کر مفاہمت کے نام پر سب کو اکٹھاکیااوراس نظریے کو کارکنوں تک منتقل کیا۔ انہوں نے ہمیشہ نفرتوں کے خاتمے کا درس د یا ، نفرتیں پیدا کرنے میں کم وقت اور ختم کرنے میں بہت وقت لگتا ہے ۔بے نظیر بھٹو کی یاد میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوے وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات نے کہا کہ بے نظیر کے مفاہمانہ نظریے کے باعث نوازشریف کی جلا وطنی ختم ہو ئی۔انہیں ایک الیکشن میں بے نظیر اور دوسرے میں صدر زرداری لائے ،نواز شریف کو سیاست سے الگ نہیں کر سکتے ۔وہ ملکی سیاست کا لازمی جزو ہیں ، صدر زرداری نے بھی نوازشریف کو الیکشن کا بائیکاٹ کرنے سے روکا، پنجاب میں ن لیگ کی حکومت کو غیر مستحکم کر سکتے تھے ،پنجاب حکومت ق لیگ کے لوٹوں کی وجہ سے قائم ہے ، پہلے روز سے پنجاب میں ن لیگ کی حکومت میثا ق جمہوریت کی نفی پر کھڑی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہر دور میں پیپلز پارٹی کی وفاداری کو مشکوک سمجھا جاتا رہا، ہمیں طعنے ملتے ہیں، الزام لگتے ہیں کہ مشرف کو ریڈ کارپٹ دیا، مشرف کو گارڈ آف آنر دیا،مشرف کو تصادم کے ذریعے ہٹانے کی کوشش کرتے تو جمہوریت طاقتور نہ ہوتی۔ پتہ نہیں ہماری حکومت ہی کیوں گرائی جاتی ہے ۔پیپلز پارٹی نے ہمیشہ عدالتوں کا احترام کیا ہے ،بدقسمتی سے ہماری آج تک عدالتوں سے نہیں بن سکی، ماضی میں دوسروں کے مینڈیٹ کو برداشت نہیں کیا جاتا تھا۔بلوچستان میں وہ جماعتیں بھی ساتھ ہیں جن کے ساتھ ماضی تلخ تھا، آج ایوان صدر میں سیاسی آدمی کا بیٹھنا آمروں کی باقیات کو اچھا نہیں لگتا۔پیپلز پارٹی کو سازشی نہیں ، سیاسی صدر چاہیے ،ان کا کہنا تھا کہ جمہوریت کیخلاف جب بھی سازش ہوئی ، ایوان صدر سے ہوئی ضیاء الحق نے اپنی بنائی اسمبلی تحلیل کی، غلام اسحاق خان دو اسمبلیاں کھا گئے ، ہمارے وزیر اعظم کو گھر بھیجا گیا، الزامات لگائے گئے ، قبل ازیں کراچی ایئرپورٹ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عوام نے ووٹ دیئے تو پھر حکومت بنائیں گے ،ایم کیو ایم اور اے این پی اتحادی ہیں مل کر الیکشن لڑ سکتے ہیں، مسلم لیگ ق کے ساتھ اتحاد برقرار رہے گا،سنی اتحاد کونسل کے ساتھ مل کرالیکشن لڑیں گے ۔الگ صوبہ جنوبی پنجاب کا حق ہے ،مقامی لوگوں کے مطالبے پر نیا صوبہ بن سکتا ہے ۔قمر زمان کائرہ کا کہنا تھا کہ ضمنی الیکشن میں ن لیگ نے اپنی ہی نشستیں جیتیں، جمہوریت کے دعویداروں نے ہمارے امیدوار کے ساتھ دھوکا کیا اور دھوکے سے ضمنی الیکشن میں کامیابی حاصل کی ، ۔ایک سوال کے جواب میں قمر زمان کائرہ نے کہا کہ وفاقی محتسب کا ادارہ لوگوں کو انصاف دینے کے لیے ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم جا بھی رہے ہیں اور آ بھی رہے ہیں الیکشن کے بعد حکومت بنائیں گے ۔

Source: Roznama Dunya

اپنا تبصرہ بھیجیں