شریف برادران نے صفائی کا ٹھیکہ دیکر 40 فیصد کمیشن لیا، راجہ ریاض

1101611088-1

بس پراجیکٹ میں 25فیصد کمیشن لے رہے ہیں،ان کی آخری جگہ جیل یا جدہ ہے خواجہ شریف کے بیٹے کومشیر بنا کر بغیر کوئی کیس لڑائے ایڈوانس 32 لاکھ دئیے ، پریس کانفرنس
لاہور(خصوصی رپورٹر) پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض نے کہا ہے کہ پاکستان میں کرپشن کی سیاست کا آغاز نوازشریف نے کیا ہے اور پہلی کرپشن انہوں نے جونیجو حکومت ختم کرانے میں کی۔ شریف برادران ترک کمپنی کو لاہور کی صفائی کا ٹھیکہ دینے کے عوض 40فیصد اوربس پراجیکٹ میں 25فیصد کمیشن لے رہے ہیں، یہ رجسٹرڈ ڈاکو ہیں، میاں صاحب کی آخری جگہ جیل یا جدہ ہے ، یہ الزامات انہوں نے گزشتہ روز پنجاب اسمبلی کیفے ٹیریا میں پریس کانفرنس میں کیا۔ راجہ ریاض نے کہا کہ شریف برادران کرپشن کے ماسٹر مائنڈ ہیں اور یہ اتنی خوبصورتی سے چوری کرتے ہیں کہ جو عام آدمی کی سمجھ سے بالاتر ہوتی ہے ۔ شریف برادران نے ایل ڈبلیو سی کے 2ارب کے بجٹ کو ترک کمپنی کے حوالے کرکے 7 ارب پر پہنچا دیا اور اس میں سے یہ 40فیصد کمیشن لے رہے ہیں اور اب فیصل آباد گوجرانوالہ، ملتان اور راولپنڈی کو بھی اس کمپنی کے حوالے کرنے جارہے ہیں جبکہ جنگلہ بس سروس کا بجٹ 32ارب سے 70ارب پر پہنچا دیا گیا ہے جس کا 25فیصد کمیشن شہباز شریف لے رہے ہیں۔ راجہ ریاض نے کہا کہ صرف چودھری پرویزالٰہی کی تختی لگنے کے باعث انہوں نے گوجرانوالہ کے کارڈیالوجی سنٹر، میو ہسپتال کے سرجری ٹاور اور جوبلی ٹاؤن کے فاطمہ جناح ڈینٹل کالج کو اپنی انا کی بھینٹ چڑھا دیا ہے ۔ شریف برادران نے خواجہ شریف کے بیٹے کو ایل ڈی اے کا مشیر بنا کر بغیر کوئی کیس لڑائے ایڈوانس 32 لاکھ اور جسٹس (ر) خلیل رمدے کے بڑے بیٹے مصطفیٰ رمدے کو ایک اور مد میں 2 کروڑ روپے ادا کئے ہیں جس کے خلاف پنجاب اسمبلی میں تحریک التوا لا رہے ہیں۔ ڈپٹی پارلیمانی لیڈر شوکت بسر ا نے الزام لگایا کہ سپورٹس میلے میں لگائے گئے 5ارب میں سے 2ارب شہباز شریف، حمزہ شہباز اور رانا مشہود نے لئے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں