Tanvir Ashraf Kaira says stealing mandate is equally a heinous crime of highest treason‏

tanveer_ashraf_kaira_lalamusa
Enough is enough and it is the time that both PML (N) and PTI should get serious and let the country out of the stand-off by hammering out an agreement during this round of negotiations starting from Sunday, December 14, said Tanvir Ashraf Kaira in a statement issued from here today.
He urged the PTI leadership to suspend the politics of agitation in the interest of the negotiations because talk and fight were dangerous for the negotiations to be result- oriented negotiations.
He said that the nation was on tenterhooks for the last many months and the country was paralysed with the withering away of the writ of the government adding the losses to the economy ran into billions of dollars to the dismay of the people who were bracing the fall out of their belligerence.
He called upon the riling Party to accept the demands of the PTI for the investigations of the allegations of electoral rigging in 2013 by the Supreme Court Judicial Commission because it was now the national demand. The PPP accepted the results of elections under protest for the sake of the continuity of the political system in the country, he maintained.
Tanvir Ashraf Kaira said that the holding of free and imaprtial elections were critical for the promotion and strengthening of democracy and fulfilling the objectives of the constitution. The manipulation of election results or stealing the mandate of the people is equally heinous crime and should be trialed under Article 6 of the constitution.
He also demanded that the members of the Election Commission of Pakistan should step down voluntarily due to their controversial role in the elections. Their presence in the ECP may be detrimental to the electoral reforms now under way by the Parliamentary Committee for the Electoral Reforms.
He added that the PPP had been victim of election riggings in the past and the Asghar Khan’s case was the case in point and others would be proved by the history.

تنویر اشرف کائرہ سیکریٹری جنرل پیپلز پارٹی پنجاب نے آج یہاں سے جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ اب وقت کی اہم ضرورت ہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان تحریک انصاف پوری سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مذاکرات کو کامیاب بنائیں۔ انہوں نے پی ٹی آئی کی قیادت سے مطالبہ کیا کہ وہ ایجی ٹیشن کو مذاکرات کے مفاد میں معطل کر دیں کیونکہ مذاکرات اور محاذ آرائی ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مسلسل محاذ آرائی کی سیاست مذاکرات کے ماحول کو خراب کر سکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ قوم کئی مہینوں نے ان جماعتوں کی ’’میں نا مانوں‘‘ کی سیاست کی وجہ سے سولی پر لٹکی ہوئی ہے اور حکومت کی رت ملک سے غائب ہونے کے ساتھ ساتھ ملکی معیشت کو بھی اربوں ڈالر کا نقصان ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام محاذ آرائی کی سیاست کی سزا بھگت رہے ہیں لیکن حکومت اور پی ٹی آئی کی قیادت کو بظاہر اسکا احساس نہیں جو کہ قابل افسوس ہے۔ انہوں نے حکمران جماعت سے مطالبہ کیا کہ وہ پی ٹی آئی کے مطالبے کو تسلیم کرے جسکے تحت انتخابی دھاندلیوں کی تحقیقات سپریم کورٹ جوڈیشل کمیشن کے تحت ہوں، تا کہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے مئی 2013 کے انتخابات میں نتائج احتجاجاً قبول کئے تھے تا کہ جمہوریت کی بقاء خطرے میں نہ پڑے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی دھاندلی کی تحقیقات اب قومی مطالبہ بن گیا ہے۔ تنویر اشرف کائرہ نے کہا کہ عوام کے مینڈیٹ کو چرانا یا اس میں گڑ بڑ کرنا پاکستان میں سنگین جرم قرار دیا جانا چاہیے جن کے خلاف آئین کے آرٹیکل 6 کے تحت مقدمات چلانے چاہئیں۔ تنویر اشرف کائرہ نے مطالبہ کیا کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ممبران کو رضاکارانہ طور پر استعفے دے دینے چاہئیں کیونکہ انکا کردار پچھلے انتخابات میں متنازعہ بن کر ابھرا ہے۔ انکی الیکشن کمیشن میں موجودگی انتخابی اصلاحات پر منفی اثرات ڈال سکتی ہیں۔ تنویر اشرف کائرہ نے کہا کہ پیپلز پارٹی ماضی میں انتخابی دھاندلی کی شکار رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اصغر خان کیس نے پیپلز پارٹی کے موقف کو درست ثابت کر دیا ہے اور باقی انتخابی دھاندلیاں بھی اسی طرح تاریخ ثابت کرے گی۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں