حکومتِ وقت کے لیے کبھی بھی محاذ آرائی کی پالیسی فائدہ مند نہیں ہوتی: میاں منظور احمد وٹو

DSC_0746

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے وفاقی حکومت اور پنجاب کی صوبائی حکومت کے اِس فیصلے کو خوش آئند قرار دیا ہے جسمیں کہا گیا ہے کہ وہ پاکستان تحریک انصاف کے لاہور میں کل ہونیوالے احتجاج میں کسی قسم کی رکاوٹ پیدا نہیں کریں گے۔انہوں نے یہ بات امیر بیگم ویلفیئر ٹرسٹ کے زیر اہتمام یہاں ایک تقریب کے بعد میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے کہی۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ حکومتِ وقت کے لیے کبھی بھی محاذ آرائی کی پالیسی فائدہ مند نہیں ہوتی اسکی ہمیشہ یہ کوشش ہونی چاہیے کہ مذاکرات کے حالات پر احسن طریقے سے سدھارا جائے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) نے پیپلز پارٹی کی حکومت کے دوران لانگ مارچ اور ٹرین مارچ کئے لیکن اُسوقت بھی حکومت نے کبھی بھی اِس حکومت کے ماڈل ٹاؤن، لاہور، اسلام آباد اور فیصل آباد جیسے انتظامی ماڈل کو نہیں اپنایا۔ایک اور سوال کے جواب میں میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ 2013 کے انتخابات میں بڑے پیمانے پر دھاندلی ہوئی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ سابق صدر آصف علی زرداری نے انتخابات کو ریٹرننگ افسروں کے انتخابات قرار دیا تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ قانون کے مطابق ریٹرننگ افسروں کی تقرری کے بعد وہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کے تحت کام کرتے ہیں لیکن اس دفعہ ریٹرننگ افسروں کو الیکشن کمیشن کے تحت نہیں رکھا گیا جو کہ بذات خود ایک بڑی دھاندلی تھی اور وہ ہدایات الیکشن کمیشن کی بجائے کہیں اور سے لے رہے تھے۔ میاں منظور احمد وٹو نے پارٹی قیادت میں اختلافات کی خبروں کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ بلاول بھٹو پارٹی کے قائد ہیں اور وہ ملکی سیاست میں بھرپور کردار ادا کریں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ چےئرمین بلاول بھٹو پیپلز پارٹی کا سب سے بڑا سیاسی کارڈ ہیں۔ اس سے قبل میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ امیر بیگم ویلفےئر ٹرسٹ بلا امتیاز سب مستحقین کی فلاح کے لیے سرگرم ہے۔ انہوں نے اس ادارے کی تعلیمی اور صحت کی خدمات کا خاص طور پر ذکر کیا۔ انہوں نے کہا کہ دیپالپور ہسپتال میں 5500 سالانہ بالکل مفت ڈائیلسز کئے جاتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ آج 12 خوش نصیب روبینہ وٹو، سربراہ امیر بیگم ویلفیئر ٹرسٹ کی سربراہی میں عمرہ کے لیے جا رہے ہیں۔ ان خوش نصیبوں میں احمد نوید، اعوان شکیل احمد، کاشف محمد صدیق، بیگم مائی اقبال، بی بی صغراء، بی بی شمشاد، بی بی بشیراں، مجید عبدل، بی بی عیداں، بی بی ڈانوں فتح، بی بی حلیمہ اور حنیف محمد شامل ہیں۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں