Martyrdom Day of Shaheed Benazir Bhutto will express total solidarity with Peshawar victims' families.‏

DSC_0009
Punjab Executive Committee of the PPP which met here today under the chair of Mian Manzoor Ahmed Wattoo decided to observe martyrdom day of Shaheed Benazir Bhutto falling on December 27 this year to express total solidarity with the families of the victims of Peshawar massacre perpetrated by the Taliban.
The meeting was attended by Nadeem Afzal Chan,Political Advisor to the Co- Chairman, Secreatry General PPP, Tanvir Ashraf Kaira, divisional co-dominators, district presidents and office bearers of Lahore. He said that with the appointment of Nadeem Afzal Chan the Party affairs between the Central Party and the provincial parties would run smoothly because he possessed special acumen as an enabling facilitator.
In the meeting it was also decided that the observance of the martyrdom day would be held at the district levels with Quran Khani, Dua and candlelight vigil by the PPP workers as a token respect for the Peshawar victims. The participants will also express their resolve to fight out terrorism till the last terrorists from this country.
After the meeting, Mian Manzoor Ahmed Wattoo while talking to media said that the PPP stood out in rendering sacrifices adding the mindset assassinated Shaheed Zulfiqar Ali Bhuttoo and Benazir Bhutto because they were the most popular leader and in their presence they could not implement their insidious designs against the people of Pakistan.
He said that PPP Co- Chairman had been consistent in fighting out terrorists with full force of the state because they were totally devoid of civility and deeply committed to barbarity. He added that today all the political leadership had come to the same conclusion that vindicated the stance of PPP and its Chairman.
He maintained that he was glad that the entire leadership of the country was on the same page to defeat the evil that was determined to impose its toxic, redundant and obscurantist ideology at the gun point.
He underscored the importance of absolute clarity in the terrorism policy because any narrative that was ambiguous would never bear the desirable fruits and perils of its being rather counter-productive could not be ruled out.
Mian Manzoor Ahmed Wattoo also suggested to the other provincial PPP leaders to observe the martyrdom day of Shaeed Benazir Bhutto on the same patter as being observed in the Punjab.
Others who attend the meeting were Raja Amir Khan Information Secretary Punjab, Dewan Mohyuddin, Aurung Zeb Burki, Samina Khalid Gurkhi, Suhail Milk, Tasneem Qureshi, Ghulam Fareed Kathia, Aziz-ur- Rehman Chan, Mian Abdul Waheed, Mian Ayub, Dr. Bangish, Afnan But,Shamim Dewan,Khalid But,Asad Ali Papa,Muhammad Asef Khan, Dr, Khayyam,Raja Riaz,Parveen Ashraf, Zahid Zulfiqar and Rana Gul Nasir etc.

پنجاب ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس آج یہاں پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹوکی زیر صدارت ہوا جسمیں ندیم افضل چن، ایڈوائزر ٹو کوچےئرمین، تنویر اشرف کائرہ، سیکریٹری جنرل پیپلز پارٹی ،ڈویثرنل کوآرڈینیٹرز، ضلعی صدور اور لاہور کے عہدیداروں نے شرکت کی ۔ اجلاس میں اس دفعہ شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کا یوم شہادت پشاور کے شہداء کے نام کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور عزم کیا گیا کہ دہشتگردوں اور دہشتگردی کے ناسور کو ختم کئے بغیر اب کوئی چارہ کار نہیں۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ ہر ضلع کی سطح پر پارٹی کے عہدیداران قرآن خوانی، دعا اور شمعیں روشن کر کے اپنے غم کا اظہار کریں گے۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ ایسی تقریبات 7 دنوں تک جاری رہیں گی۔ اجلاس کے بعد میاں منظور احمد وٹو نے میڈیاسے باتیں کرتے ہوئے کہا کیونکہ پیپلز پارٹی دہشتگردی کے ہاتھوں سب سے زیادہ متاثر ہوئی ہے اور اس نے زیادہ شہادتیں دی ہیں اس لیے ہم سمجھتے ہیں کہ دہشتگردی کی برائی کو ختم کرنے کے لیے آخری دہشتگرد کے خاتمے تک جاری جنگ جاری رکھی جائے۔ انہوں نے کہا کہ ہم پارٹی کی شہادتوں کے بھی وارث ہیں اور دہشتگردوں کے ہاتھوں ہونیوالی تمام شہادتوں کے بھی وارث ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس مائنڈ سیٹ کا مقابلہ کرنا ہے جو اب سول سوسائٹی میں سرائیت کر گیا ہے جو اپنے نظریات کو بندوق کے زور پر نافذ کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسی مائنڈ سیٹ نے شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بینظیر بھٹو کو شہید کیا تا کہ پاپولر لیڈرشپ کو ختم کیا جائے اور پھر ان کا مقابلہ کرنے والا کوئی نہ رہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ چےئرمین بلاول بھٹو نے شروع دن سے ہی ان دہشتگردوں کو انہی کی زبان میں شکست دینے کی اہمیت پر زور دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے اصولی موقف کی اب ملک کی تمام سیاسی پارٹیاں تائید کر رہی ہیں اور ہمیں خوشی ہے کہ تمام سیاسی قیادت اس برائی کو ختم کرنے کے لیے اب ایک پیج پر ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ دہشتگردی کی پالیسی میں کسی قسم کا ابہام نہیں ہونا چاہیے اور پولیٹیکل وِل کے ساتھ ان دہشتگردوں کا صفایا کیا جانا چاہیے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ وہ خیبر پختونخواہ اور دوسرے صوبوں سے بھی درخواست کریں گے کہ وہ محترمہ کا یوم شہادت پشاور کے سانحہ کو ساتھ ملا کر ضلعی سطح پر منائیں اور وہ اس ضمن میں پارٹی کی اعلیٰ قیادت سے بات کریں گے۔ انہوں نے ندیم افضل چن کی بطور ایڈوائز ٹوکوچےئرمین تعیناتی پارٹی کے لیے نیک شگون قرار دیا اور کہا کہ اس سے پارٹی کے معاملات میں مرکز اور صوبوں کے درمیان بہت بہتری آئے گی۔اجلاس میں جن عہدیداران نے شرکت کی ان میں ثمینہ خالد گھرکی، دیوان محی الدین، سہیل ملک، اورنگزیب برکی، تسنیم قریشی، غلام فرید کاٹھیا، خالد بٹ، ذاکر بنگش، اسد علی پاپا، چوہدری منظور، راجہ ریاض احمد، ڈاکٹر خیام، شمیم دیوان، پروین اشرف، زاہد ذوالفقار، محمد آصف خان، میاں عبدالوحید، افنان بٹ، میاں ایوب، عزیزالرحمن چن، رانا گل ناصر اور عمر خان شامل تھے۔

کیٹاگری میں : News

اپنا تبصرہ بھیجیں